Friday , February 23 2018
Home / کھیل کی خبریں / آسٹریلیا نے انگلینڈ کو 64 رنز سے ہرایا

آسٹریلیا نے انگلینڈ کو 64 رنز سے ہرایا

لارڈس ۔ 7 ۔ ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) آسٹریلیا نے دوسرے ون ڈے انٹرنیشنل میں انگلینڈ کو 64 رنز سے شکست دے کر پانچ میچوں کی سیریز میں 2-0کی برتری حاصل کر لی۔ آسٹریلیا نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 7 وکٹوں کے نقصان پر 309 رنز بنائے، کپتان اسٹیون اسمتھ، جارج بیلی اور مچل مارش نے نصف سنچریاں اسکور کیں جبکہ انگلینڈ کی ٹیم مطلوبہ ہدف حاصل نہ کر سکی اور پوری ٹیم 245 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی، ایون مورگن 85 رنز کے ساتھ نمایاں رہے۔ پیٹ کمنز نے چار وکٹیں حاصل کیں، مچلمارش کو مین آف دی میچ کا ایوارڈ دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق لارڈز، لندن میں کھیلے گئے سیریز کے دوسرے ون ڈے میچ میں انگلینڈ کے کپتان ایون مورگن نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا جو غلط ثابت ہوا۔ آسٹریلیا نے مقررہ 50 اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 309 رنز بنائے۔مچل مارش نے 31 گیندوں پر تین چھکوں اور سات چوکوں کی مدد سے 64 رنز بنائے۔ کپتان اسٹیون اسمتھ 70، جارج بیلی 54، گلین میکسویل 49 اور شین واٹسن 39 رنز کے ساتھ نمایاں رہے۔ انگلینڈ کی طرف سے بین اسٹوکس نے تین، اسٹیون فن نے دو جبکہ عادل راشد اور معین علی نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔ انگلینڈ کی ٹیم مطلوبہ ہدف حاصل کرنے میں ناکام رہی اور پوری ٹیم 42.3 اوورز میں 245 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی، ایون مورگن نے 85 رنز کی اننگز کھیلی تاہم وہ اپنی ٹیم کو شکست سے نہ بچا سکے۔ جیسن رائے 31، ایلیکس ہیلز 18، جیمز ٹیلر 43، بین اسٹوکس 10، جوز بٹلر صفر، معین علی 8، کرس ووکس 6، عادل راشد 2 اور لیم پلنکیٹ 24 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے۔ آسٹریلیا کی طرف سے پیٹ کمنز نے عمدہ باؤلنگ کا مظاہرہ کیا اور 56 رنز کے عوض 4 وکٹیں حاصل کیں۔ گلین میکسویل نے دو جبکہ مچل مارش، نیتھن کولٹر نائل اور مچل سٹارک نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔ مچلمارش کو میان آف دی میچ قرار دیا گیا۔

Top Stories

مولانا آزاد کی برسی پر تقریب کا انعقاد دہلی ومرکزی حکومت کی جانب سے بڑے لیڈران نے شرکت نہیں کی‘ صدر جمہوریہ ہند کی جانب سے ان کی مزار پر گل پوشی اور نائب صدر جمہوریہ نے اپنا پیغام بھیجا نئی دہلی۔آزادہندو ستا ن کے پہلے وزیر اتعلیم مولانا آزاد کے ساٹھ ویں یوم وفات کے موقع پر آج ان کے مزار واقع مینابازار میں ایک تقریب کا انعقاد ائی سی سی آر کی جانب سے کیاگیا۔افسوس کی بات یہ رہی کہ اس مرتبہ بھی مولانا آزاد کی وفات کے موقع پر دہلی ومرکزی حکومت کی جانب سے کسی بڑے لیڈران نے شرکت نہیں کی۔ چونکہ جامع مسجد پر کناڈہ کے وزیراعظم کو آناتھا اس لئے تقریب کو بہت مختصر کردیا گیاتھا۔ اس دوران صدرجمہوریہ ہند کی جانب سے ان کی مزار پر گل پوشی کی گئی او رنائب صدر جمہوریہ ہند نے اپنا پیغام بھیجا۔ ائی سی سی آر کے ڈائریکٹر نے مولانا آزاد کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاکہ جہاں تک مولانا آزاد کا تعلق ہے اور انہوں نے جو خدمات انجام دیں انہیں فراموش نہیں کیاجاسکتا۔ ہندو مسلم میں اتحاد قائم کیااس کی مثال ملنا مشکل ہے انہوں نے بھائی چارہ کوفروغ دیا۔ انٹر فیتھ ہارمنی فاونڈیشن آف انڈیاکے چیرمن خواجہ افتخار احمد نے کہاکہ مولانا آزاد نے لڑکیوں کی تعلیم پر بہت زیادہ توجہ دی۔ جب حکومت قائم ہونے کے بعد قلمدان کی تقسیم ہونے لگے تو مولانا آزاد نے تعلیم کا قلمدان لیاتاکہ لڑکیو ں کی تعلیم پر خاص دھیان دیاجاسکے۔ خاص طور سے مسلم لڑکیو ں کی تعلیم پر زیادہ دھیان دیاجائے۔کیونکہ مسلم لڑکیو ں کو پڑھنے کے زیادہ مواقع نہیں مل پاتے ۔ معروف سماجی کارکن فیروز بخت احمد مولانا سے منسوب ایک پروگرام میں پونے گئے ہوئے تھے۔ انہوں نے نمائندہ کو فون پر بتایا کہ مولانا آزاد کی تعلیمات کو قوم نے بھلادیا ہے۔ آج تک ان جیسا لیڈر پیدا نہیں ہوسکا اور افسوس کی بات ہے کہ مولانا آزاد کی برسی یا یوم پیدائش کے موقع پر دہلی یامرکزی حکومت کی جانب سے کوئی بڑا لیڈر شریک نہیں ہوتا۔ ایسا معلوم ہوتا کہ حکومت نے مولانا آزاد کو بھلادیا ہے۔ اس دوران سی سی ائی آر کی ایک کمار مولانا ابولکلام آزاد فاونڈیشن کے چیرمن عمران خان سمیت کافی لوگ موجود تھے۔
TOPPOPULARRECENT