Tuesday , December 18 2018

آصف سابع کی خدمات اور کارنامے ’’ اظہر من الشمس ‘‘

عادل آباد۔/22جنوری، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) نظام حکومت پر تنقید کرنے کا کسی بھی قائد کو اختیار نہیں۔نظام کے دور میں تعمیر کردہ تاریخی عمارتیں، عوامی فلاح و بہبود کیلئے تعمیر کردہ پراجکٹس، کسانوں کی سہولت کیلئے تعمیرکئے گئے آبی ذخائر جس سے زراعت پیشہ افراد آج بھی استفادہ کررہے ہیں۔ یہ بات رکن راجیہ سبھا و مرکزی کانگریس کمیٹی سکریٹری مسٹر وی ہنمنت راؤ نے مستقر عادل آباد میں منعقدہ ریالی کے دوران ایک بڑے اجتماع سے مخاطب ہوکر کہی۔ انہوں نے نظام حکومت کی بھرپور ستائش کرتے ہوئے کہا کہ نظام کے دور میں قائم کردہ ریلوے اور بس سرویس کے ذریعہ عوام آج بھی استفادہ کررہے ہیں۔ امبیڈکر چوک پر منعقدہ جلسہ کے دوران مسٹر وی ہنمنت راؤ نے جہاں آندھرائی قائدین، چیف منسٹر کرن کمار ریڈی، تلگودیشم کے سربراہ مسٹر این چندرا بابو نائیڈو، وائی ایس آر کانگریس صدر مسٹر جگن موہن ریڈی پر سخت تنقید کی وہیں

گجرات کے چیف منسٹر نریندر مودی کو وزیر اعظم کیلئے دن میں خواب دیکھنے کے برابر ثابت کرتے ہوئے 2002ء میں گجرات میں قتل عام کا ذمہ دار قرار دیا۔ سابق چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی بی جے پی اور نریندر مودی سے دوستی کو مفاد پرست سیاست ٹھہرایا۔ علحدہ ریاست تلنگانہ تشکیل عمل کے اقدام پر محترمہ سونیا گاندھی سے اظہار تشکر کرنے کی غرض سے اندرا رتھ یاترا کا آغاز مسٹر وی ہنمنت راؤ نے حیدرآباد سے کیا جو نلگنڈہ، محبوب نگر، نظام آباد کے بیشتر منڈل جات و مواضعات سے گذرتے ہوئے کل ضلع عادل آباد کے سرحد سون پہنچی جہاں سے نرمل، نرڈگنڈہ، اچوڑہ، گوڑی تہنور کا احاطہ کرتے ہوئے کل شام مستقر عادل آباد میں داخل ہوئی۔ ضلع کی سرحد سے عادل آباد تک مختلف مقامات پر موصوف کا بیانڈ باجہ اور آتشبازی کے ساتھ خیرمقدم کیا گیا۔

ضلع عادل آباد کے 9اسمبلی حلقہ جات کے بیشتر منڈل جات سے گذرنے کی خاطر آج اندویلی، اٹنور، جینور، کیرامیری، آصف آباد میں شب بسری کے بعد کاغذ نگر، ریبنا، تانڈور، بیلم پلی، نینلد، مندامری، منچریال میں شب بسری کے بعد لکشٹی پیٹ سے ہوتے ہوئے کریم نگر ضلع میں داخل ہوگی۔ چار روزہ اس یاترا کے دوران مسٹر وی ہنمنت راؤ نے اپنی ’’ اندرا رتھ ‘‘ پر سوار ہوکر مختلف مقامات پر عوام سے مخاطب ہوکر کانگریس کو ایک سیکولر جماعت ثابت کیا۔ عنقریب منعقد ہونے والے اسمبلی اور لوک سبھا کے انتخابات میں کانگریس اراکین کی کامیابی کا تذکرہ کرتے ہوئے مسٹر راہول گاندھی کو یقینی وزیر اعظم قرار دیا۔ قبل ازیں ضلع کانگریس کمیٹی صدر مسٹر سی رامچندر ریڈی نے محترمہ سونیا گاندھی سے اظہار تشکر کرتے ہوئے رکن راجیہ سبھا مسٹر وی ہنمنت راؤ کے اس اقدام کی ستائش کی۔

اس موقع پر مسٹر مہیشور ریڈی رکن اسمبلی نرمل، مسٹر ساجد خان ٹاؤن کمیٹی صدر، مسٹر ڈگمبر راؤ پاٹل سابق صدر نشین مجلس بلدیہ نے اپنے خطاب کے دوران کانگریس کی کارکردگی بیان کی اور مسٹر سی رامچندر ریڈی کی خدمات کی بھرپور ستائش کی۔ بعد ازاں آج صبح سابق ریاستی وزیر مسٹر سی رامچندر ریڈی کی قیامگاہ پر پُرہجوم میڈیا کو مخاطب کرتے ہوئے مسٹر وی ہنمنت راؤ نے آندھرائی قائدین کی جانب سے اسمبلی میں تلنگانہ بل کو نقصان پہنچانے ، صدر جمہوریہ کی ہدایت کو نظرانداز کرنے کا الزام عائد کیا۔ حیدرآباد کے اطراف واکناف کی فاضل ہزاروں ایکر اراضی کو فرضی طور پر حاصل کرتے ہوئے عمارتیں، تجارتی مراکز کرنے کا بھی آندھرائی قائدین پر انہوں نے الزام عائد کیا۔

TOPPOPULARRECENT