Thursday , November 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / آفریدی کا متوقع آخری میچ ‘شین واٹسن پر توجہ مرکوز

آفریدی کا متوقع آخری میچ ‘شین واٹسن پر توجہ مرکوز

محمد عامر اور عثمان خواجہ میں دلچسپ ٹکراؤ متوقع

موہالی۔24 مارچ (سیاست ڈاٹ کام ) آئی سی سی ٹوئنٹی 20ورلڈ کپ کے گروپ2 میںکل یہاں آسٹریلیا اور پاکستان کے درمیان ایک اہم مقابلہ کھیلا جائے گا جہاں پاکستانی ٹیم کامیابی حاصل کرتے ہوئے ٹورنمنٹ میں خود کو باقی رکھنے کی آخری اُمید کو برقرار رکھنے کیلئے کوشاں ہوں گی تو دوسری جانب آسٹریلیائی ٹیم پاکستان کو شکست دے کر گروپ کے آخری مقابلہ میں ہندوستان کے خلاف کامیابی کے ذریعہ سیمی فائنل میں رسائی کا منصوبہ رکھتی ہے ۔ گروپ 2میں بنگلہ دیش کیلئے تمام امیدیں اُس وقت ختم ہوگئی جب گذشتہ رات اسے سنسنی خیز مقابلہ میں ہندوستان کے خلاف شکست برداشت کرنی پڑی ۔ نیز نیوزی لینڈ کی ٹیم نے ہندوستان ‘ آسٹریلیا اور پاکستان کو شکست دے کر پہلے ہی سیمی فائنل میںرسائی حاصل کرلی ہے ۔ دریں اثناء اس گروپ سے اب سیمی فائنل کی ایک نشست کیلئے ہندوستان اور آسٹریلیا کیلئے امکانات کافی مستحکم ہے کیونکہ اگر آسٹریلیائی ٹیم کل یہاں کھیلے جانے والے مقابلہ میں پاکستان کو شکست دیتی ہے تو پھر ہندوستان کے خلاف کھیلا جانے والا مقابلہ عملی طور پر ٹورنمنٹ کا کوارٹر فائنل مقابلہ ہوگا ۔پاکستان کیلئے امکانات انتہائی کم ہے کیونکہ اگر وہ آسٹریلیا کو شکست دینے میں کامیاب بھی ہوتا ہے تو اسے ہندوستان اور آسٹریلیا کے درمیان کھیلے جانے والے مقابلے کے نتیجہ کا انتظار کرنا پڑسکتا ہے ۔

پاکستانی ٹیم کے کپتان شاہد آفریدی کیلئے آسٹریلیا کے خلاف کھیلاجانے والا مقابلہ ان کے طویل ترین بین الاقوامی کریئر کا آخری مقابلہ ہوسکتا ہے ۔ کیونکہ اس مقابلہ میں شکست کے بعدپاکستانی ٹیم ٹورنمنٹ سے باہرہ وجائے گی ۔ جب کہ آفریدی کے علاوہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے بھی کپتان کی تبدیلی کا اشارہ دے دیا ہے ۔ دوسری جانب آسٹریلیا کے آل راؤنڈر شین واٹسن نے بھی ورلڈ کپ کے بعد بین الاقوامی کرکٹ سے سبکدوشی کا اعلان کردیا ہے ۔ 14سالہ طویل عرصہ کے دوران شین واٹسن آسٹریلیائی ٹیم کے ٹسٹ ‘ ونڈے اور ٹوئنٹی 20 میں مستقل رکن رہے ہیں ۔ اس مقابلہ میں آسٹریلیا کیلئے بائیں ہاتھ کے اوپنر عثمان خواجہ بھی توجہ کے مرکز ہوں گے کیونکہ پانچ برس قبل اپنے بین الاقوامی کریئر کا آغاز کرنے والے عثمان خواجہ پہلی مرتبہ اپنے آبائی وطن کے خلاف آسٹریلیائی ٹیم کی نمائندگی کریں گے ۔ عثمان خواجہ کو ان کی شاندار بیٹنگ صلاحیتوں کی وجہ سے پاکستان کے سابق اوپنر سعید انور کی طرز کا بیٹسمین قرار دیا جارہا ہے ۔ نیز گذشتہ دو مقابلوں میں انہوں نے جس طرح کی بیٹنگ کی اور خاص کر فرنٹ فُٹ پر جو اسٹروکس کھیلیں ہیں اس نے سعید انور کی یاد تازہ کردی ہے ۔ پاکستانی نژاد اوپنر عثمان خواجہ اور محمد عامر کے درمیان ایک دلچسپ ٹکراؤ متوقع ہے ۔ کیونکہ دونوں ہی کھلاڑی جارحانہ کھیل کا مظاہرہ کررہے ہیں ۔آفریدی جنہوں نے بنگلہ دیش اور نیوزی لینڈ کے خلاف متاثرکن مظاہرہ کیا ہے وہ اپنے ممکنہ آخری مقابلہ میں کامیابی حاصل کرنے کے خواہاں ہیں۔

TOPPOPULARRECENT