Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / آلیر کے مظلوم شہیدوں کو کیوں بھلادیا گیا

آلیر کے مظلوم شہیدوں کو کیوں بھلادیا گیا

مرزا عبدالرحیم بیگ (ٹیپو) کا بیان

حیدرآباد ۔ 4 مارچ (راست) آلیر کے پانچ مسلم نوجوانوں کو جن کا بیدردی سے انکاؤنٹر کیا گیا جو قوم کاعظیم سرمایہ تھے۔ وقارالدین بی کام کے ساتھ ڈاکٹر و انجینئر تھے، ان کو ہتھکڑی پہنا کر الزام لگایا گیا کہ انہوں نے پولیس کی تحویل میں رہ کر پولیس کے ہتھیار چھین کر نہ جانے کن کے اشاروں پر ان پانچوں کو گولی مار کر شہید کردیا گیا لیکن ان کے بارے میں حکومت آج تک خاموش ہے۔ ان کے وارثوں کو کوئی مالی امداد بھی جاری نہیں کی گئی، مقامی قیادت مگرمچھ کے آنسو بہاتی رہی، مرکزی اور ریاست حکومتوں کی مشترکہ سازش سے پانچ گرائجویٹ ہمیشہ کیلئے اس دنیا سے کوچ کر گئے اور آج تک ان کے وارثوں کو کوئی مالی امداد، ایکس گریشیاء اور نہ کسی فرد کو ملازمت دی گئی۔ انہوں نے ورثاء اور خاندان کے کسی ایک فرد کو ملازمت دینے کے علاوہ فی شہید 20 لاکھ روپئے ایکس گریشیاء دینے کا مطالبہ کیا۔ مرزا عبدالرحیم بیگ عرف ٹیپو نے کہا کہ اس واقعہ کے خاطی عہدیداروں کو معطل کیا جاکر مکمل تحقیقات کی جائے اور انہوں نے مقامی قیادت کو بھی اس معاملے میں دخل دیتے ہوئے حکومت کو اس طرف توجہ دلانے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT