Wednesday , December 19 2018

آمرانہ رویہ ترک کرنے کجریوال کو بی جے پی کی تلقین

مسائل کے حل کی سیاست کرنے کانگریس کا مشورہ

مسائل کے حل کی سیاست کرنے کانگریس کا مشورہ
نئی دہلی ۔ 18 مئی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی نے آج اروند کجریوال پر الزام عائد کیا کہ وہ دہلی کے حالیہ انتشار میں ’’آمرانہ ‘‘ رویہ اختیار کئے ہوئے ہیں اور کہا کہ اُن کا میدان جنگ گورنر نجیب جنگ کے ساتھ تھا لیکن اب دستوری بحران کی سمت پیشرفت کررہا ہے جبکہ کانگریس نے اُن سے خواہش کی کہ وہ مخالفتی سیاست ترک کردیں اور مسائل حل کرنے کی کوشش کریں۔ بی جے پی قائد اور قائد اپوزیشن دہلی اسمبلی وجیندر گپتا نے کہا کہ چیف منسٹر کا رویہ غیراخلاقی ہے ، میرے خیال میں کجریوال بہت زیادہ مایوس ہوچکے ہیں اور حکومت چلانے کے قابل نہیں رہے اس لئے انھوں نے بلاوجہ ایک سینئر عہدیدار کا کمرہ مقفل کردیا ۔ بی جے پی قائد وجیندر گپتے نے پرنسپال سکریٹری (خدمات ) انندو مجمدار کا کمرہ مقفل کرنے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ شکنتلا گیملن کا بحیثیت کارگذار چیف سکریٹری نجیب جنگ کی ہدایات پر ہوا ہے ۔ صدر دہلی بی جے پی ستیش اُپادھیائے نے کہا کہ موجودہ انتشار دستوری بحران کی سمت بڑھ رہا ہے اور کجریوال کا آمرانہ رویہ موجودہ صورتحال کا ذمہ دار ہے ۔ انھیں چاہئے کہ بعض دستوری طریقہ کار ، دستوری حدود کی پابندی کریں لیکن وہ ایسا نہیں کررہے ہیں کیونکہ وہ جمہوریت میں یقین نہیں رکھتے ۔ دہلی پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر نشین اجئے ماکن نے کہاکہ کجریوال کو سمجھ لینا چاہئے کہ دہلی ایک مختلف معاملہ ہے جس کے کئی محکمے ہیں ۔ کجریوال مخالفت کی سیاست جاری نہیں رکھ سکتے ، انھیں اس کے بجائے مسائل حل کرنے کی سیاست پر عمل کرنا چاہئے ۔ کانگریس قائد کے بموجب دہلی کی عوام نے کجریوال اور نریندر مودی کو مرکز میں منتخب نہیں کیا تھا کیونکہ یہ لوگ اقتدار کی جنگ میں ملوث تھے بلکہ عوام کی بہتر زندگیوں کیلئے منتخب کیا تھا ۔ تاہم انھوں نے عام آدمی پارٹی کی حکومت کی مذمت کی کیونکہ انھوں نے ایک عہدیدار کو بدنام کیا ہے اور الزام عائد کیا ہے کہ گیملن نے ڈسکام کمپنیوں کی تائید کی ہے ، ساتھ ہی ساتھ یہ مساوی طورپر مزاحیہ کھیل کھیل رہی ہے ۔ چیف منسٹر کو کارروائی کرنا چاہئے تھا یا کارروائی کی سفارش کرنا چاہئے تھا اور جس عہدیدار پر الزامات عائد کئے گئے ہیں اُس کا تبادلہ کرنا چاہئے تھا لیکن انھوں نے ایسا کچھ نہیں کیا ۔

TOPPOPULARRECENT