Wednesday , January 17 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھرائی حکمرانوں نے تلنگانہ کو بنجر علاقہ میں تبدیل کردیا

آندھرائی حکمرانوں نے تلنگانہ کو بنجر علاقہ میں تبدیل کردیا

مشن کاکتیہ کے آغاز کے بعد نظام آباد میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کا خطاب

مشن کاکتیہ کے آغاز کے بعد نظام آباد میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کا خطاب
حیدرآباد 12 مارچ ( این ایس ایس ) حکومت کے ترجیحی پروگرام ’ مشن کاکتیہ ‘ کا ضلع ورنگل میں سداشیو نگر میں افتتاح انجام دیتے ہوئے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے الزام عائد کیا کہ متحدہ آندھرا پردیش میں آندھرائی حکمرانوں نے تلنگانہ کی جھیلوں اور آبی ذخائر کو تباہ کردیا ۔ چیف منسٹر نے مشن کاکتیہ کے آغاز کے بعد خطاب میں کہا کہ یہ روایت ہے کہ جس کسی نے علاقہ پر حکمرانی کی جھیلوں کو بخش دیا تاہم آندھرا علاقہ کے انضمام کے بعد سیما آندھرا حکمرانوں نے ہماری جھیلوں اور آبی ذخائر کو خشک کردیا ۔ اس سے ان کے مفادات وابستہ تھے ۔ انہوں نے کہا کہ جن بادشاہوں نے ہمارے علاقہ پر حکمرانی کی تھی انہوں نے جھیلوں کا تحفظ کیا تھا تاکہ یہاں کسانوں کی پیداوار بہتر ہوسکے ۔ ریڈی اور کاکتیہ حکومتوں میں حکمرانوں نے جھیلوں کی بہتری اور انہیں ایک دوسرے سے مربوط کرنے کو بہت اچھے اقدامات کئے تھے ۔ آندھرا پردیش نے تقسیم سے قبل تلنگانہ علاقہ کی جھیلوں کو عمدا خشک کرنے کے اقدامات کئے جس کے نتیجہ میں علاقہ میں غربت اور دیگر مسائل پیدا ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اپنی کوششوں سے کسانوں کے چہروں پر بحالی لانے کے عہد کی پابند ہے ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ جھیلوں اور تالابوں و کنٹوں کی مرمت و بحالی کے کام معیاری ہونگے اور عہدیداروں کو ہدایت دیدی گئی ہے کہ جو کنٹراکٹرس قواعد کی تکمیل نہ کریں انہیں بلیک لسٹ کردیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت چاہتی ہے کہ ریاست میں 46,000 جھیلوں و تالابوں کو بحال کرتے ہوئے گاووں میں کسانوں کو ضرورت کے مطابق پانی آبپاشی کیلئے فراہم کرنا چاہتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ پراجیکٹ بہت قیمتی ہے او عوام کو بھی اس پراجیکٹ کی تکمیل میں اپنا حصہ ادا کرنا چاہئے تاکہ علاقہ تلنگانہ بہترین زرعی پیداوار کے سنہرے دور میں داخل ہوسکے اور کسانوں کو اس کے فوائد حاصل ہوسکیں۔ چیف منسٹر نے خبردار کیا کہ جھیلوں و وکنٹوں کی بحالی کے کاموں میں جو کوئی عہدیدار بدعنوانیوں میں ملوث رہیں گے انہیں جیل بھیج دیا جائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ اہل کنٹراکٹرس کو اور مسابقتی بولی دینے والوں کو کنٹراکٹس دینے شفافیت کے ساتھ آن لائین ٹنڈرس طلب کئے جائیں گے تاکہ معیاری کام اور بروقت تکمیل کو یقینی بنایا جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ آن لائین ٹنڈرس طلب کرنے کا مقصد سارا عمل شفاف بنانا ہے ۔ ایسا کرنے سے اہل اور بہتر کام کرنے والے کنٹراکٹرس کو اپنی مہارتوں کے استعمال کا موقع ملے گا ۔ انہوں نے کہا کہ کاموں میں تاخیر اور خرابی کی ذمہ داری کنٹراکٹرس پر عائد کی جائیگی اور انہیں اس کے اخراجات ادا کرنے ہونگے ۔ حکومت کسی بھی قیمت پر تلنگانہ میں ہزاروں تالابوں اور جھیلوں کو بحال کرنا چاہتی ہے تاکہ کسانوں کو اپنی کاشت کیلئے درکار مقدار میں پانی مل سکے اور ریاست سنہرے تلنگانہ میں تبدیل ہوسکے ۔ انہوں نے کہا کہ آندھرائی حکمرانوں نے مسلسل لا پرواہی کے ذریعہ اور کچھ نے عمدا تلنگانہ کو نظر انداز کرتے ہوئے یہاں ہزاروں جھیلوں اور تالابوں کو خشک کرنے میں اہم رول ادا کیا ہے ۔ انہوں نے کنٹراکٹرس سے بھی اپیل کی کہ وہ اس کام کو مشن کے طور پر آگے بڑھائیں۔

TOPPOPULARRECENT