آندھراپردیش میں آر ٹی سی کرایوں میں اضافہ کی کوئی تجویز نہیں

آرام دہ سفر کی سہولت فراہم کرنا حکومت کا اہم مقصد ، اچن نائیڈوکا بیان
حیدرآباد ۔ /4 اپریل (سیاست نیوز) ریاست آندھراپردیش میں آر ٹی سی بس کرایوں میں اضافہ کی کوئی تجویز فی الوقت حکومت کے زیرغور نہیں ہے ۔ تاہم ریاستی عوام کو بہتر و آرام دہ سفر کی سہولتیں فراہم کرنا آندھراپردیش اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کا اہم مقصد رہے گا ۔ آج وجئے واڑہ میں واقع پنڈت جواہر لعل نہرو بس اسٹانڈ میں دس نئی شیتل بسوں کا آغاز کرتے ہوئے وزیر ٹرانسپورٹ آندھراپردیش مسٹر کے اچن نائیڈو نے اس بات کا اظہار کیا اور بتایا کہ دیہی علاقوں میں چلائی جانے والی ’’پلے ویلگو‘‘ بسوں کیلئے ڈیزل پر ویاٹ کی وصولی سے استثنیٰ دینے کی تجویز پر حکومت سنجیدگی سے غور کررہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آندھراپردیش اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن میں تقررات کی گنجائش یا مواقع نہ رہنے سے متعلق جاری کردہ سرکیولر نمبر (7) کو فی الفور روکدینے کی عہدیداران آر ٹی سی کو ہدایت دی گئی ۔ مسٹر اچن نائیڈو نے آر ٹی سی کی کارکردگی کو مزید فعال و کارکرد بنانے کیلئے کئے جانے کے اقدامات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ آر ٹی سی ورکرس و ملازمین کی فلاح و بہبود اور ان کی سیکیوریٹی پر ریاستی تلگودیشم حکومت اپنی اولین ترجیح دے گی ۔ لہذا ملازمین آر ٹی سی کیلئے مسئلہ کن پائے جانے والے سرکیولر نمبر (7) کو فوری واپس لینے کی ہدایت دے دی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ امراوتی کے نام سے شروع کردہ آرام دہ لکژری بسوں کے ذریعہ مسافرین سے غیر معمولی ردعمل حاصل ہورہا ہے اور مسافروں میں ان بسوں کے ذریعہ سفر کرنے میں کافی دلچسپی پائی جارہی ہے ۔ جس کو پیش نظر رکھتے ہوئے ہر ضلع مستقر سے ان بسوں کو چلانے پر غور کیا جارہا ہے ۔ وزیر ٹرانسپورٹ نے بتایا کہ ایک شیتل بس کی خریدی پر (1.20) کروڑ روپئے کے مصارف عائد ہورہے ہیں ۔ اس افتتاحی تقریب میں مسٹر سریندر بابو منیجنگ ڈائرکٹر آندھراپردیش اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کے علاوہ دیگر اعلیٰ عہدیداروں اے پی ایس آر ٹی سی بھی موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT