Tuesday , December 11 2018

آندھراپردیش میں اسمبلی حلقوں کی ازسرنو حدبندی کیلئے سازگار ماحول

وزیراعظم سے مثبت ردعمل، چیف منسٹر چندرا بابو کا تلگودیشم کوآرڈینیشن کمیٹی اجلاس سے خطاب

حیدرآباد ۔20 جنوری (سیاست نیوز) ریاست آندھراپردیش میں حلقہ جات اسمبلی کی تعداد میں اضافہ کرنے کے مقصد سے حلقہ جات اسمبلیوں کی ازسرنو حد بندیوں کا تعین کرنے کیلئے مرکزی حکومت سے مثبت اشارے حاصل ہورہے ہیں۔ آج امراوتی میں تلگودیشم پارٹی کوآرڈینیشن کمیٹی کا اجلاس صدر تلگودیشم پارٹی و چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی صدارت میں منعقد ہوا۔ اس اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیف منسٹر نے اس بات پر مسرت کا اظہار کیا کہ گذشتہ دنوں وزیراعظم مسٹر نریندر مودی سے ملاقات کے بعد حالات سازگار ہوئے اور ریاست کو درپیش مختلف مسائل کی یکسوئی کے سلسلہ میں حالات میں کافی بہتری پائی جارہی ہے۔ انہوں نے پارٹی قائدین سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ وزیراعظم سے ملاقات مثبت رہی جبکہ وزیراعظم مسٹر نریندر مودی نے ان کی جانب سے کی گئی تفصیلی گفتگو کی سنجیدگی کے ساتھ سماعت کی اور جن مسائل کو وزیراعظم کے روبرو انہوں نے پیش کیا ان مسائل کی یکسوئی کا واضح تیقن دیا۔ چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ ریاست کی تقسیم کے موقع پر دیئے گئے تیقنات پر عمل آوری نہ کئے جانے پر عدلیہ سے رجوع ہونے سے متعلق وزیراعظم کو واقف کروایا گیا تھا اور بعدازاں مکمل تفصیلات سے میڈیا کو واقف کروایا گیا تھا جس پر چند اخبارات میں دیئے گئے تیقنات پر عمل نہ کرنے کی صورت میں عدلیہ سے رجوع ہونے کے موضوع کو غیرمعمولی اہمیت دی گئی اور اس مسئلہ کو خصوصیت کے ساتھ اجاگر کیا گیا۔ چیف منسٹر نے واضح طور پر کہا کہ ریاست کو حاصل ہونے والے حق سے بہترانداز میں استفادہ کرنے میں کوئی غلط بات ہرگز نہیں ہوگی۔ مسٹر چندرا بابو نائیڈو نے بی جے پی کے خلاف بعض قائدین کی جانب سے کئے ہوئے ریمارکس پر اپنی سخت برہمی کا اظہار کیا اور ساتھ ہی ساتھ بی جے پی سے متعلق اخبارات میں شائع اطلاعات پر نہ صرف اپنی سخت ناراضگی کا اظہار بھی کیا اور پارٹی قائدین کو مشورہ دیا کہ بی جے پی کے تعلق سے پارٹی ہدایت کے بغیر کوئی بھی بیان بازی سے گریز کریں۔ چندرا بابو نائیڈو نے اس توقع کا اظہار کیا کہ آندھراپردیش کو درپیش مختلف مسائل کی عاجلانہ یکسوئی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT