Saturday , April 21 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھراپردیش میں تلگودیشم کو شکست دینے کی کسی کو ہمت نہیں

آندھراپردیش میں تلگودیشم کو شکست دینے کی کسی کو ہمت نہیں

پارٹی کا ورکشاپ ‘قائدین کو انتخابات کیلئے تیار رہنے کا مشورہ : چندرا بابو نائیڈو
حیدرآباد ۔21جنوری ( سیاست نیوز) ریاست آندھراپردیش میں تلگودیشم پارٹی کو شکست دینے کی ہمت اور طاقت کسی کو بھی نہیں ہے ۔ قومی صدر تلگودیشم پارٹی و چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے آج اونڈاولی ( وجئے واڑہ) میں واقع اپنی قیامگاہ پر پارٹی قائدین کے ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی اور قائدین کو مشورہ دیا کہ مستقبل کو دیکھتے ہوئے منصوبہ جات مرتب کرلیں ۔ قائدین کی طرز کارکردگی بہتر و شاندار رہنے پر عوام بھی ہمیشہ ان ہی کے ساتھ رہیں گے اور بھرپور تعاون کرتے رہیں گے ۔ مسٹر چندرا بابو نے کہا کہ انتخابات کے تعلق سے گذشتہ عرصہ کے دوران حکومت کی مخالفت پر انحصار ہوا کرتا تھا لیکن آج مخالفت حکومت پر نہیں بلکہ حکومت کی کارکردگی پر انحصار ہے ۔ قومی صدر تلگودیشم پارٹی نے حیدرآباد کی ترقی نہ دینے سے متعلق قائدین کی جانب سے کی جانے والی بے بنیاد و غلط معلومات پر مبنی اطلاعات پر تنقیدوں کو مسترد کردیا اور کہا کہ سال 1995 میں تلگودیشم پارٹی کی زیرقیادت حکومت تشکیل سے قبل اور بعد ازاں حیدرآباد کی شکل کیسی ہوگی دیکھنے کے بعد ہی ہرکسی کو حقیقت کا بخوبی اندازہ ہوجائے گا ۔ انہوں نے حیدرآباد کی ترقی سے متعلق تنقیدیں کرنے والے قائدین کو ہدف ملامت بنایا اور کہا کہ تلگودیشم حکومت میں ہی ہر لحاظ سے شہر حیدرآباد کو ترقی دیتے ہوئے حیدرآباد کے نام کو دنیا کے نقشہ میں شامل کروایا گیا ۔ چیف منسٹر نے کانگریس پارٹی کے موقف کا تذکرہ کرتے ہوئے آندھراپردیش کی غیر منصفانہ انداز میں تقسیم کرنے کی وجہ سے ہی آندھراپردیش سے کانگریس پارٹی کا مکمل صفایا ہوگیا ۔ آندھراپردیش کی تقسیم سے پیش آنے والے مسائل و مشکلات سے مسٹر نریندر مودی کو واقف کروایا ہے اور بتایا گیا کہ ریاست کی شرح ترقی میں اضافہ رہنے سے متعلق وزیراعظم کو واقف کرواتے ہوئے بتایا کہ ماہانہ آمدنی وغیرہ میں ریاست بہت پیچھے ہے ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ متحدہ و تقسیم ہونے کے بعد بھی آندھراپردیش میں درج فہرست اقوام و قبائل پسماندہ اور اقلیتی طبقات کی فلاح و بہبود کیلئے حکومت نے جو اقدامات کئے سابق میں کسی حکومت نے اس طرح کے اقدامات نہیں کئے ۔ انہوں نے اپوزیشن جماعتوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں امراوتی ۔ پٹی سیما اور پولاورم پراجکٹ و دیگر کے تعلق سے کی جانے والی تشہیر غلط و بے بنیاد ہے ۔ انہوں نے اپوزیشن پر اپنی شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آندھراپردیش کیلئے خصوصی پیکیج کی رقومات حصول طلب ہیں ‘ علاوہ ازیں مالیاتی خسارہ کو پُر کرنا ضروری ہے ۔ قومی صدر تلگودیشم نے پُرزور الفاظ میں کہا کہ آئندہ منعقد ہونے والے انتخابات میں کسی بھی طرح 175 حلقہ جات اسمبلی کی منظوری پر کامیابی حاصل کرنا ضروری ہے ۔ چندرا بابو نائیڈو نے پارٹی قائدین و کارکنوں پر زور دیا کہ وہ انتخابات کیلئے ابھی سے اپنے آپ کو تیار رکھیں کیونکہ انتخابات کبھی بھی منعقد ہوسکتے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT