Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھراپردیش کو خصوصی موقف کیلئے وائی ایس آر کانگریس کا مطالبہ

آندھراپردیش کو خصوصی موقف کیلئے وائی ایس آر کانگریس کا مطالبہ

حیدرآباد۔10اگست ( سیاست نیوز) صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی مسٹر جگن موہن ریڈی اور پارٹی کے دوسرے قائدین آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا موقف دینے کیلئے دہلی میں احتجاجی دھرنا منظم کیا ۔ پارلیمنٹ مارچ کے دوران پولیس نے انہیں گرفتار کرلیا۔ پولیس اور وائی ایس آر کانگریس پارٹی کی دھکم پہل کے دوران وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے کئی قائدین زخمی ہوگئے ۔ جگن موہن ریڈی نے 28اگست کو آندھراپردیش  بند بنانے کا اعلان کیا ۔ صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی و قائد اپوزیشن آندھراپردیش مسٹر جگن موہن ریڈی نے آج دہلی کے جنتر منتر پر آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ ‘ ارکان اسمبلی ‘ ارکان قانون ساز کونسل کے علاوہ دوسرے قائدین کے ساتھ احتجاجی دھرنا منظم کیا ‘ بعد ازاں پارلیمنٹ مارچ کا اہتمام کیا ۔ پولیس نے جگن موہن ریڈی اور وائی ایس آر کانگریس پارٹی قائدین کو گرفتار کرتے ہوئے انہیں پارلیمنٹ اسٹریٹ پولیس اسٹیشن منتقل کیا ‘بعد ازاں رہا کردیا ۔ اس موقع پر پولیس اور پارٹی قائدین کے درمیان بحث و تکرار ہوگئی ۔ قبل ازیں جنتر منتر  پر منعقدہ احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے جگن موہن ریڈی نے مرکزی این ڈی اے حکومت سے استفسار کیا کہ جب شمال مشرق کی ریاستوں میں خصوصی ریاست کے موقف کو برقرار رکھا جاسکتا ہے تو آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا موقف کیوں نہیں دیا جاسکتا ۔ خصوصی ریاست کے موقف کیلئے آندھراپردیش سے ہونے والی ناانصافی کے خلاف احتجاج کرنے وہ دہلی پہنچے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کے اعتراض کو نظرانداز کرتے ہوئے آندھراپردیش کو تقسیم کردیا گیا ۔لوک سبھا میں تقسیم آندھراپردیش کی بل کی مخالفت کرنے پر ہمیں معطل کرتے ہوئے پارلیمنٹ کی راست ٹیلی کاسٹ کارروائی کو منسوخ کرتے ہوئے ریاست کی تقسیم کی گئی جو تاریخ کا یوم سیاہ تھا ۔ آندھراپردیش کی عوام اس کو کبھی بھول نہیں پائیں گے ۔ کانگریس نے بی جے پی اور چندرا بابو نائیڈو کی مدد سے لوک سبھا میں بل منظور کرایا ۔ پارلیمنٹ میں بل پر مباحث کے دوران وزیراعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ نے آندھراپردیش کیلئے 5سال تک خصوصی ریاست کا درجہ دینے کا اعلان کیا ۔ اپوزیشن کا رول ادا کرنے والی بی جے پی نے آندھراپردیش کو پانچ سال کیلئے خصوصی ریاست کے موقف کو ناکافی قرار دیتے ہوئے 10سال تک خصوصی ریاست کا موقف دینے کا مطالبہ کیا تھا ۔ اس وقت تلگودیشم نے بھی ریاست کی تقسیم کیلئے ووٹ دیا تھا ۔ تلگودیشم کے ارکان پارلیمنٹ نے کامیابی کیلئے مکمل تعاون کرنے کا اعلان کیا ۔ جگن موہن ریڈی نے کہا کہ خصوصی ریاست کا موقف دینے پر 90فیصد گرانٹس حاصل ہوں گے  اور صرف 10فیصد قرض تصور کیا جائے گا ۔ خصوصی ریاست کا درجہ نہیں دیا گیا تو گرانٹس کی شکل میں صرف 30فیصد فنڈز حاصل ہوں گے ۔ صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی نے کہا کہ پارلیمنٹ میں ایک مرتبہ بھی آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے کا کوئی مطالبہ نہ کرتے ہوئے راہول گاندھی 15ماہ بعد آندھراپردیش کا دورہ کرتے ہوئے عوامی مسائل پر مگرمچھ کے آنسو بہایا ہے ۔ بی جے پی سے اپنے وعدے سے انحراف کرنے کا الزام عائد کیا ۔ آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے کیلئے مرکزی حکومت پر دباؤ بنانے میں ناکام ہونے کا چیف منسٹر آندھراپردیش چندرا بابو نائیڈو پر الزام عائد کیا ۔ انہوں نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو اور نریندر مودی پر دباؤ بنانے کیلئے وہ 28اگست کو آندھراپردیش بند منانے کی عوام سے اپیل کررہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT