Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھراپردیش کی تقسیم ، سیاسی مفادات حاصلہ کا عجلت میں لیا گیا فیصلہ

آندھراپردیش کی تقسیم ، سیاسی مفادات حاصلہ کا عجلت میں لیا گیا فیصلہ

تلگو زبان، تلنگانہ آندھرا کو جوڑے رکھے گی ، صدر مقام امراوتی کی سنگ بنیاد تقریب سے وزیر اعظم نریندر مودی کا خطاب

٭   امراوتی ، تاریخی و تہذیبی ورثہ کا حامل علاقہ : چندرا بابونائیڈو
٭  دارالحکومت کی سنگاپور ، جاپان طرز پر ترقی کا عزم
٭  صدر مقام کی تعمیر میں ہر ممکنہ تعاون : کے چندر شیکھر راؤ
محمد مبشرالدین خرم
امراوتی /22 اکٹوبر۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے آج آندھرا پردیش کے نئے دارالحکومت امراوتی کیلئے سنگ بنیاد رکھا۔ اس موقع پر انہوں نے سنگ بنیاد تقریب سے خطاب کے دوران کانگریس کو تنقید کا نشانہ بنایا اور ریاست آندھراپردیش کی ترقی کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا ۔ اس تقریب میں چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو مسٹر کے چندر شیکھر راؤ چیف منسٹر تلنگانہ ، گورنر آندھراپردیش و تلنگانہ مسٹر ای ایس ایل نرسمہن ، گورنر ٹاملناڈو مسٹر کے روشیا ، گورنر آسام پی بی آچاریہ کے علاوہ مرکزی و ریاستی وزراء کے علاوہ مختلف شعبہ حیات سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات موجود تھیں ۔ وجئے واڑہ و گنٹور کے قریب واقع امراوتی میں آندھراپردیش کے صدر مقام کے تعمیراتی کاموں کا عملاً آغاز ہوچکا ہے اور آج سنگ بنیاد تقریب منعقد ہوئی ۔ وزیر اعظم نے اس تقریب سے خطاب کے دوران غیر منقسم ریاست آندھراپردیش کی تقسیم کے فیصلہ کو سیاسی مفادات حاصلہ کی جانب سے عجلت میں لیا گیا فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ریاست کو تقسیم کرنے والوں نے ایسے نکات رکھے ہیں جس سے ریاست آندھراپردیش و تلنگانہ میں رسہ کشی جاری رہے گی ۔ نریندر مودی نے اس موقع پر پارلیمنٹ کی مٹی اور جمنا ندی کا پانی امراوتی کیلئے حوالے کیا ۔ انہوں نے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ پارلیمنٹ کے پارلیمنٹ کی مٹی کا حوالے کیا جانا ملک کے صدر مقام سے آندھراپردیش کے صدر مقام کو جوڑنے کے مترادف ہے ۔ انہوں نے آندھراپردیش تنظیم جدید بل میں آندھراپردیش سے کئے گئے تیقنات دئے اور کہا کہ مرکزی حکومت دئے گئے تیقنات کو پورا کرنے کیلئے سنجیدہ ہے ۔ نریندر مودی نے بتایا کہ وہ امراوتی کے منصوبہ سے پرامید ہیں اور یہ کہہ سکتے ہیں کہ یہ شہر اسمارٹ سیٹیز کے منصوبوں میں رہنمایانہ کردار ادا کرے گا۔ انہوں نے ہندوستان میں شہری آبادیوں کے فروغ کو وقت کی اہم ضرورت قرار دیتے ہوئے کہا کہ امراوتی کو حکومت نے عوامی صدر مقام قرار دیا ہے اور منصوبہ کا جائزہ لینے سے یہ بات واضح ہوجاتی ہے کہ واقعی یہ شہر عوامی صدر مقام ثابت ہوگا ۔ نریندر مودی نے  حکومت آندھراپردیش اور چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی سراہنا کرتے ہوئے کہا کہ قلیل مدت میں مسٹر نائیڈو نے ایک وسیع منصوبہ پیش کیا ہے جس سے ان کی دوراندیشی کا اندازہ ہوتا ہے ۔ نریندر مودی نے تلنگانہ اور آندھراپردیش کے عوام کو متحدہ طور پر ترقی کیلئے کمربستہ ہونے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ ان ریاستوں کی تقسیم ہوئی ہے لیکن دونوں ریاستوں کی روح تلگو زبان ہے جو انہیں جوڑے رکھے گی ۔ انہوں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ آندھراپردیش کا نیا صدر مقام امراوتی ملک کے شہروں کے معاشی و ترقیاتی انقلاب کی قیادت کرے گا ۔ انہوں نے دونوں تلگو ریاستوں کی مرکزی حکومت کو جانب سے مدد کا تیقن دیا اور کہا کہ وہ ضرور ان ریاستوں کی ترقی کیلئے درکار مدد کریں گے ۔ مسٹر چندرا بابو نائیڈو چیف منسٹر آندھراپردیش نے اس موقع پر اپنے خطاب کے دوران بتایا کہ نئے صدر مقام امراوتی کیلئے 33 ہزار ایکڑ اراضیات حاصل کی گئی ہیں اور اس کے علاوہ سرکاری اراضیات بھی اس صدر مقام کا حصہ رہیں گی ۔ انہوں نے بتایا کہ اس شہر کو آباد کرنے کا مقصد ریاست آندھراپردیش کی ترقی کو یقینی بنانا ہے ۔ مسٹر نائیڈو نے کہا کہ امراوتی تاریخی و تہذیبی ورثہ کا حامل علاقہ ہے اور صدر مقام کو امراوتی نام دئے جانے پر زبردست عوامی ردعمل حاصل ہوا ہے ۔ انہوں نے مرکزی حکومت سے خواہش کی کہ مرکز آندھراپردیش کی ترقی میں تعاون کرے چونکہ آندھراپردیش کے پاس فی الحال معاشی زون جیسا کوئی ضلع موجود نہیں ہے ۔ چیف منسٹر آندھراپردیش نے کہا کہ ترکمنستان ، قازکستان کے علاوہ سنگاپور ، جاپان کے طرز پر امراوتی کو ترقی دی جائے گی ۔ انہوں نے کے سی آر کی تقریب میں شرکت پر اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ریاستوں کی ترقی کیلئے ملکر کام کرنے کی ضرورت ہے ۔ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اس موقع پر اپنے خطاب کے دوران حکومت آندھراپردیش کو اس بات کا تیقن دیا کہ حکومت تلنگانہ آندھرارپردیش صدر مقام کی تعمیر و ترقی میں ہر ممکنہ تعاون کرنے تیار ہے ۔ انہوں نے نئے صدر مقام کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عالمی سہولیات اور معیارات کے مطابق اس شہر کو ترقی دی جانی چاہئے ۔ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اس موقع پر عوام کو دسہرہ کی مبارکباد پیش کی ۔ امراوتی سنگ بنیاد تقریب میں مسٹر وینکیا نائیڈو ، مسٹر بنڈارو دتاتریہ ، مسز نرملا سیتا رامن ، مسٹر وائی ایس چودھری ، مسٹر اشوک جگپتی راجو کے علاوہ چیف جسٹس حیدرآباد ہائی کورٹ جسٹس دلیپ بھوسلے ، مسٹر راموجی راؤ ، وینکٹیش ، ڈپٹی ہائی کمشنر برطانیہ متعینہ حیدرآباد ، مسٹر عمر اوگلو قونصل جنرل ترکی ، مسٹر روی پرکاش ، مسٹر بالاکرشنا ، مسٹر لوکیش نائیڈو کے علاوہ صنعت کاروں ، فنکاروں ، معززین شہر ، غیر مقیم ہندوستانیوں اور عہدیداروں کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ چیف منسٹر تلنگانہ کے ہمراہ امراوتی پہونچنے والوں میں جناب محمد محمود علی اور مسٹر ای راجندر واؤ شامل تھے ۔

TOPPOPULARRECENT