Tuesday , November 20 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھراپردیش کے مالی حالت پر وائیٹ پیپر جاری کرنے کا مطالبہ

آندھراپردیش کے مالی حالت پر وائیٹ پیپر جاری کرنے کا مطالبہ

ریاست کے مالی موقف پر اظہارتشویش، سابق کانگریس ایم پی اونڈا ولی ارون کمار

حیدرآباد ۔ 15 ستمبر (سیاست نیوز) سابق رکن پارلیمان کانگریس پارٹی ریاست آندھراپردیش مسٹر اونڈاولی ارون کمار نے ریاست کے مالی موقف پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس صورتحال کیلئے تلگودیشم کی زیرقیادت حکومت کو ہدف ملامت بنایا اور چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو سے فی الفور آندھراپردیش کے مالی موقف کی مکمل تفصیلات پر مبنی وائیٹ پیپر جاری کرنے کا پرزور مطالبہ کیا۔ آج اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے سابق چیف منسٹرس ڈاکٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی، کے روشیا اور این کرن کمار ریڈی کے دورحکومت میں کبھی بھی اوورر ڈرافٹ حاصل کرنے کیلئے پہل نہیںکی گئی تھی لیکن مسٹر این چندرا بابو نائیڈو جب بھی (متحدہ آندھراپردیش اور اب نئی ریاست آندھراپردیش میں) چیف منسٹر کے عہدہ پر فائز رہے ریاست کو قرضوں کے بوجھ میں مبتلاء کردیا۔ انہوں نے حکومت آندھراپردیش کی طرز کارکردگی کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ حکومت رقومات کے معاملہ میں من مانی اقدامات کرنے کی وجہ سے مصارف میں زبردست اضافہ ہوا۔ مسٹر ارون کمار نے حکومت کی جانب سے مختلف ترقیاتی کاموں کی انجام دہی بالخصوص پولاورم پراجکٹ کے جاری کاموں میں تیزی پیدا کرنے کے مقصد سے جاری کردہ امراوتی بانڈز کا تذکرہ کرتے ہوئے ان بانڈز کی اجرائی میں متعدد بے قاعدگیوں کے خدشات کا اظہار کیا اور امراوتی بانڈز کے مسئلہ پر کھلے عام مباحث کیلئے حکومت آندھراپردیش سے آگے آنے کی پرزور اپیل کی تاکہ حکومت اپنی شفافیت کو ثابت کردکھا سکے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت مباحث کیلئے آگے آنے سے پس و پیش کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT