آندھراپردیش کے مفادات کیلئے پارلیمنٹ میں جدوجہد کو جاری رکھا جائے

چیف منسٹر و صدر تلگودیشم چندرا بابو نائیڈو کا پارٹی ارکان پارلیمان کو ہدایت
حیدرآباد /7 مارچ ( سیاست نیوز ) قومی صدر تلگودیشم پارٹی و چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے ریاست آندھراپردیش کو خصوصی موقف فراہم کرنے کے مطالبہ پر پارلیمنٹ میں جدوجہد جاری رکھنے کی پارٹی کے ارکان پارلیمان کو واضح ہدایت دی ۔ آج صبح دہلی میں مقیم ارکان پارلیمان کے ساتھ ٹیلی کانفرنس کے ذریعہ خطاب کرتے ہوئے مسٹر چندرا بابو نائیڈو نے ارکان کو گذشتہ دن منعقدہ پارٹی اجلاس کی روئیداد سے واقف کروایا اور بتایا کہ 95 فیصد ارکان اسمبلی تلگودیشم نے فوری طور پر بی جے پی کے ساتھ جاری دوستی کو ختم کرلینے کا مشورہ دیا ۔ انہوں نے ارکان پارلیمان سے آج پارلیمنٹ میں اختیار کی جانے والی حکمت عملی سے متعلق ضروری ہدایت دیں ۔ اس موقع پر آندھراپردیش کے مسئلہ پر مرکزی حکومت کے سخت گیرموقف پر ارکان پارلیمان تلگودیشم نے بھی ناراضگی کا اظہار کیا ۔ نائیڈو نے رقومات استعمال کرنے سے متعلق سرٹیفکیٹس آندھراپردیش حکومت کی جانب سے نہ دئے جانے سے متعلق مرکزی حکومت کے ریمارکس کو بالکلیہ طور پر غلط قرار دینے پر برہمی کا اظہار کیا اور مرکزی حکومت کو یاد دلایا کہ رقومات کے استعمال سے متعلق سرٹیفکیٹس پیش کرنے میں ملک بھر میں ریاست کو تیسرا مقام حاصل ہے اور بالخصوص پولاورم پراجکٹ کے مصارف سے متعلق رقومات خرچ کرنے کی تفصیلات پر مبنی سرٹیفکیٹس جب کاتب ہی روانہ کردئے جارہے ہیں ۔ چیف منسٹر نے مرکزی حکومت سے استفسار کیا کہ آیا رقومات کے مصارف سے متعلق سرٹیفکیٹس دئے بغیر مزید رقومات جاری کئے جارہے ہیں ؟ انہوں نے بتایا کہ آمدنی خسارہ کے تحت فراہم کی جانیو الی رقومات کے مصارف سے متعلق سرٹیفکیٹس روانہ کرنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ جبکہ مرکزی اداروں کو دئے گئے 600 کروڑ روپیوں کے مصارف سے متعلق سرٹیفکیٹس مرکزی ادارے ہی مرکزی حکومت کردیں گے ۔ ارکان پارلیمنٹ نے راجیہ سبھی میں وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے رکن پارلیمان مسٹر وجئے سائی ریڈی کے طرز عمل سے مسٹر چندرا بابو نائیڈو کو واقف کروایا اور کہا کہ وائی ایس آر کانگریس پارٹی ارکان پارلیمان وزیر اعظم ایوان میں موجودہ ہیں تو وہ ارکان گاندھی مجسمہ کے باہر جارکر احتجاج کر رہے ہیں اور اگر وزیر اعظم ایوان میں موجود نہ ہوں تو وہ ( وائی ایس آر کانگریس پارٹی ارکان پارلیمان ) ایوان میں احتجاج کر رہے ہیں ۔ اس طرح وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے ارکان پارلیمان کے موقف سے ریاستی عوام بخوبی واقف ہوچکے ہیں ۔ انہوں نے انتہائی سخت الفاظ میں کہا کہ حکومت آندھراپردیش مرکزی حکومت سے کوئی نئے مطالبات کیلئے احتجاج و جدوجہد نہیں کر رہی ہے ۔ بلکہ صرف اور صرف قانون ریاستی تقسیم میں دئے گئے تیقنات پر عمل آوری کے مطالبہ پر ہی تلگودیشم ارکان پارلیمان اپنے احتجاج و جدوجہد کو جاری رکھے ہوئے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT