Sunday , December 17 2017
Home / سیاسیات / آندھرا پردیش اسمبلی سیشن کا بائیکاٹ

آندھرا پردیش اسمبلی سیشن کا بائیکاٹ

منحرف ارکان کو نااہل قرار دینے وائی ایس آر کانگریس کا مطالبہ
امراوتی ۔ 26 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) اپوزیشن وائی ایس آر کانگریس نے آئندہ ماہ سے شروع ہورہے آندھرا پردیش اسمبلی سیشن کے بائیکاٹ کا فیصلہ کیا ہے۔ پارٹی نے مطالبہ کیا کہ 20 ارکان اسمبلی جنہوں نے انحراف کرتے ہوئے حکمراں تلگو دیشم پارٹی میں شمولیت اختیار کرلی، ان تمام کو ’’نااہل‘‘ قرار دیا جائے۔ وائی ایس آر کانگریس نے پارٹی سے بغاوت کرنے والے 4 ارکان کو جنہیں کابینی وزراء کا عہدہ دیا گیا ہے، فی الفور برطرف کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ وائی ایس آر کانگریس لیجسلیچر پارٹی کے ڈپٹی لیڈر پی رام چندر ریڈی نے کہا کہ ایسے وقت جبکہ جمہوریت کا مذاق اُڑایا جارہا ہے، ہم اپنا سَر جھکائے اسمبلی میں بیٹھے نہیں رہ سکتے، اسی لئے ہم نے اسمبلی سیشن کے جو توقع ہے کہ 10 نومبر سے شروع ہوگا، بائیکاٹ کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی سے انحراف کرنے والے ارکان اسمبلی کو جب تک نااہل قرار نہیں دیا جاتا، ہم اسمبلی اجلاس میں شرکت نہیں کریں گے۔ وائی ایس آر مقننہ پارٹی کا اجلاس آج اسمبلی میں قائد اپوزیشن وائی ایس جگن موہن ریڈی کی زیرصدارت منعقد ہوا۔ رام چندر ریڈی نے بتایا کہ اسمبلی سے جاری کردہ تازہ بلیٹن میں کہا گیا ہے کہ وائی ایس آر کانگریس کی تعداد 66 ہے، یہاں تک کہ 4 وزراء کو بھی وائی ایس آر کانگریس ارکان بتایا گیا ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیا ہم مخلوط حکومت کا حصہ ہیں؟انہوں نے کہا کہ حکومت ، جمہوریت کا مذاق اُڑا رہی ہے اور دیڑھ سال سے اب تک 20 ارکان اسمبلی کے ساتھ کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ہم بہت جلد صدر جمہوریہ، وزیراعظم اور ریاستی گورنر سے بھی نمائندگی کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT