Saturday , October 20 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش ریاست میں بدعنوانیوں پر بڑی حد تک کنٹرول

آندھرا پردیش ریاست میں بدعنوانیوں پر بڑی حد تک کنٹرول

محکمہ انسداد رشوت ستانی کی چوکسی ، ڈائرکٹر جنرل اے سی بی آر پی ٹھاکر کا ادعا
حیدرآباد ۔ 23 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : اے سی بی کے ڈی جی آر پی ٹھاکر نے کہا کہ گذشتہ ایک سال کے دوران بڑے پیمانے پر اقدامات کرنے کے باعث آندھرا پردیش میں بدعنوانیوں پر بڑی حد تک کنٹرول کیا گیا ہے ۔ گذشتہ سال بدعنوان ریاستوں کی فہرست میں آندھرا پردیش دوسرے مقام پر تھا جو اب گھٹ کر 19 ویں مقام پر پہونچ گیا ہے ۔ آر پی ٹھاکر نے اپنے ایک سالہ کارکردگی پر رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو بدعنوانیوں پر قابو پاتے ہوئے ریاست کو ترقی دینے کے خواہش مند ہیں ۔ انہوں نے آندھرا پردیش میں صفر فیصد تک بدعنوانیاں گھٹا دینے کے احکامات جاری کئے ہیں ۔ جس پر اے سی بی مستعدی سے کام کررہی ہے اور عوام کی بھی انہیں اور ڈپارٹمنٹ کو مکمل تائید حاصل ہورہی ہے ۔ بدعنوان افراد کی فہرست تیار کرتے ہوئے خصوصی منصوبہ بندی کے ساتھ کام کیا جارہا ہے ۔ جس کے نتیجے میں بڑے بڑے بدعنوان افراد کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ رشوت طلب کرنے والوں کے خلاف جال بچھا کر کارروائی کی جارہی ہے ۔ اے سی بی کی سرگرمیوں سے متاثر ہو کر عوام بدعنوانیوں کا خاتمہ کرنے میں تعاون کررہے ہیں ۔ بدعنوانیوں کی شکایت درج کرانے کے لیے 1100 ٹیلی فون نمبر دیا گیا ہے ۔ سوشیل میڈیا پر نوجوان زبردست ردعمل کا اظہار کررہے ہیں ۔ رشوت قبول کرنے والے 146 افراد کو اے سی بی نے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا ہے ۔ آمدنی سے زیادہ اثاثہ جات رکھنے والے 47 افراد کو جیل بھیج دیا گیا ہے ۔ اچانک دورے اور دوسرے معاملت میں 303 افراد کے خلاف مقدمات درج کئے گئے ہیں جن میں 39 افراد جیل کو بھی گئے ہیں ۔ 17 ملازمین کو ملازمت سے برطرف کردیا گیا ہے۔ ملازمت سے سبکدوش ہونے والے 9 ملازمین کے وظیفے روک دئیے گئے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT