Monday , October 15 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش میں اقلیتوں کی ترقی کیلئے مؤثر اقدامات

آندھرا پردیش میں اقلیتوں کی ترقی کیلئے مؤثر اقدامات

ائمہ و موذنین کے لیے ماہانہ ہدیہ اسکیم متعارف ، اسمبلی و کونسل کے مشترکہ اجلاس سے گورنر کا خطاب

ائمہ و موذنین کے لیے ماہانہ ہدیہ اسکیم متعارف ، اسمبلی و کونسل کے مشترکہ اجلاس سے گورنر کا خطاب

حیدرآباد ۔ 7 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : گورنر آندھرا پردیش مسٹر ای ایس ایل نرسمہن نے ریاست آندھرا پردیش کی ترقی و نئی راجدھانی ( نئے دارالحکومت ) کی تعمیر میں بلاتخصیص سیاثسی وابستگی ریاستی حکومت کے ساتھ بھر پور تعاون کرنے کی تمام جماعتوں سے پر زور اپیل کی اور نئی راجدھانی کے لیے اپنی قیمتی اراضیات دینے والے کسانوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ریاست آندھرا پردیش جو کہ مالی مشکلات و مسائل سے دوچار ہے ۔ مرکزی حکومت سے بھر پور تعاون کی شدید ضرورت ہے ۔ آج یہاں آندھرا پردیش اسمبلی میں بجٹ سیشن کے آغاز پر قانون ساز اسمبلی و کونسل کے منعقدہ مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے گورنر مسٹر ای ایس ایل نرسمہن نے تلگو زبان میں اپنی تقریر کا آغاز کر کے اپنی ماباقی تقریر انگریزی میں جاری رکھی اور اپنی 35 منٹ طویل تقریر کا اختتام تلگو زبان میں مختصر الفاظ کے ساتھ کیا ۔ گورنر آندھرا پردیش کی انگریزی زبان میں تقریبا 39 صفحات پر مشتمل تقریر میں ریاست کی تقسیم و بعد کے نتائج ریاست کو درپیش مسائل اور حکومت کی جانب سے گذشتہ 9 ماہ میں روبہ عمل لائے گئے عوامی فلاح و بہبودی پروگراموں و اسکیمات کا مکمل احاطہ کرتے ہوئے مرکزی حکومت سے بھر پور تعاون کی آندھرا پردیش حکومت کی توقعات و امیدوں کا تفصیلی اظہار کیا ۔ انہوں نے ریاست آندھرا پردیش میں مختلف طبقات کی فلاح و بہبود کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت ( ریاستی حکومت ) بالخصوص اقلیتی طبقات کی فلاح و بہبود کے لیے بھی موثر و مثبت اقدامات کررہی ہے اور ان اقدامات کے ایجنڈہ کے مطابق حکومت آندھرا پردیش اقلیتی طبقات کی ترقی کے لیے دکان ، مکان اور روشنی جیسے پروگراموں کو روبہ عمل لارہی ہے ۔ علاوہ ازیں شادی خانوں کی تعمیر کے اقدامات کررہی ہے جو کہ حکومت نے انتخابات کے موقعہ پر عوام سے وعدے کئے تھے اور کہا کہ حکومت آندھرا پردیش مساجد کے اماموں اور موذنوں کے لیے ماہانہ اعزازی ہدیہ اسکیم کو بھی متعارف کیا ہے ۔ اقلیتی طبقہ کے بے روزگار نوجوانوں کو روزگار کی فراہمی کے لیے آندھرا پردیش میناریٹی فینانس کارپوریشن سے مالی تعاون فراہم کرنے کے لیے اس اسکیم کو بینکوں سے مربوط کرنے کے اقدامات کررہی ہے ۔ اس کے علاوہ ان کی حکومت ( آندھرا پردیش حکومت ) آندھرا پردیش کے زائد از ایک لاکھ اقلیتی طلباء کے لیے ٹیوشن فیس اور فیس ری ایمبرسمنٹ اسکیم کو روبہ عمل لارہی ہے ۔ گورنر آندھرا پردیش نے کہا کہ موجودہ حالات میں اپنی پڑوسی و دیگر ریاستوں کے مساوی آندھرا پردیش ریاست کی ترقی کے لیے مرکزی حکومت سے مالی تعاون کرنے کی شدید ضرورت ہے کیوں کہ گذشتہ 9 ماہ کے دوران حکومت آندھرا پردیش کی توقعات کے مطابق ریاست کو مدد و تعاون حاصل نہیں ہوا ہے ۔ گورنر نے کہا کہ کئی ایک معاملوں میں مرکزی حکومت سے ریاست آندھرا پردیش کے لیے ہمدردانہ مثبت ردعمل حاصل ہونے کی بھی شدید ضرورت ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT