Thursday , January 18 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش میں اقلیتی بہبود کے بجٹ میں اضافہ اور اوقافی جائیدادوں کی ترقی پر غور

آندھرا پردیش میں اقلیتی بہبود کے بجٹ میں اضافہ اور اوقافی جائیدادوں کی ترقی پر غور

چیف منسٹر چندرا بابو کے جائزہ اجلاس میں انچارج سکریٹری اقلیتی بہبود شیخ محمد اقبال کی تجاویز

چیف منسٹر چندرا بابو کے جائزہ اجلاس میں انچارج سکریٹری اقلیتی بہبود شیخ محمد اقبال کی تجاویز
حیدرآباد۔/8جنوری، ( سیاست نیوز) آندھرا پردیش میں اقلیتی بہبود کے بجٹ میں اضافہ اور اوقافی جائیدادوں کی ترقی کیلئے حکومت سے خصوصی گرانٹ حاصل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انچارج سکریٹری اقلیتی بہبود شیخ محمد اقبال ( آئی پی ایس) نے چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی جانب سے طلب کردہ مختلف محکمہ جات کے اعلیٰ عہدیداروں کے اجلاس میں اس سلسلہ میں حکومت کو بعض تجاویز پیش کیں۔ آندھرا پردیش میں جاریہ مالیاتی سال اقلیتی بہبود کا بجٹ 371کروڑ ہے جبکہ آئندہ مالیاتی سال کیلئے شیخ محمد اقبال 930 کروڑ بجٹ کی تجویز پیش کی ہے۔ انہوں نے اقلیتوں کو مختلف پیشہ ورانہ کورسیس میں ٹریننگ اور اقلیتی فینانس کارپوریشن کے ذریعہ سبسیڈی اور دیگر امدادی اسکیمات کیلئے بجٹ میں اضافہ کی تجویز پیش کی۔ انہوں نے آندھرا پردیش میں اوقافی جائیدادوں کی ترقی کیلئے 200کروڑ روپئے کی سرمایہ کاری کا مشورہ دیا اور کہا کہ ان جائیدادوں کی ترقی کے بعد وقف بورڈ حکومت کو یہ رقم واپس کرنے کے موقف میں ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ گنٹور، وجئے واڑہ، اونگول، کڑپہ اور اننت پور میں کئی قیمتی اوقافی اراضیات موجود ہیں جنہیں بی او ٹی طریقہ کار سے ترقی دی جاسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی جائیدادوں کی ترقی کی صورت میں وقف بورڈ کو جو آمدنی ہوگی اس سے وہ حکومت کے 200کروڑ باآسانی واپس کرسکتا ہے۔انہوں نے حکومت آندھرا پردیش سے کہا کہ اوقافی جائیدادوں کی ترقی کے بعد حکومت کو اقلیتی بہبود کیلئے علحدہ بجٹ مختص کرنے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ اوقافی اداروں کی آمدنی سے ہی اقلیتی بہبود کی کئی اسکیمات پر عمل آوری کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے متحدہ آندھرا پردیش میں اسپیشل آفیسر وقف بورڈ کی حیثیت سے اس طرح کی تجویز پیش کی تھی۔ خانگی اداروں کو لیز پر اراضی حوالے کرتے ہوئے جائیدادوںکو باآسانی ترقی دی جاسکتی ہے۔ شیخ محمد اقبال نے آندھرا پردیش حکومت کو تجویز پیش کی کہ اوقافی جائیدادوں کی تعمیر و مرمت کیلئے بجٹ میں 42کروڑ روپئے وقف بورڈ کو بطور گرانٹ مختص کئے گئے۔ جائزہ اجلاس میں چیف منسٹر نے اقلیتی بہبود سمیت دیگر محکمہ جات کے بجٹ کی تیاری کے سلسلہ میں عہدیداروں سے تجاویز طلب کیں۔ انہوں نے کمزور طبقات کی بھلائی سے متعلق اسکیمات پر موثر عمل آوری کی ہدایت دی ہے۔ جناب شیخ محمد اقبال نے بتایا کہ آندھرا پردیش میں آئندہ مالیاتی سال مختلف پیشہ ورانہ کورسیس میں ٹریننگ کا اہتمام کیا جائے گا۔اس کے علاوہ اقلیتی فینانس کارپوریشن کے ذریعہ چھوٹے کاروبار شروع کرنے کیلئے غریب مسلمانوں کو ضمانت کے بغیر قرض فراہم کرنے کی بھی تجویز ہے۔انہوں نے حکومت کو تجویز پیش کی کہ تلنگانہ کی ’ شادی مبارک ‘ اسکیم کی طرز پر نئی اسکیم شروع کی جائے جس کے تحت غریب مسلم لڑکیوں کی شادی کے موقع پر50ہزار روپئے کی امداد فراہم کی جائے۔ آندھرا پردیش میں فی الوقت اجتماعی شادی کی اسکیم پر عمل آوری جاری ہے جس کے لئے بجٹ میں 50لاکھ روپئے مختص کئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT