آندھرا پردیش میں بی جے پی کو دھکہ

دو اہم قائدین تلگودیشم اور وائی ایس آر کانگریس میں شامل
حیدرآباد۔/7 مارچ، ( سیاست نیوز) آندھرا پردیش میں ریاست کو خصوصی موقف دینے کے مطالبہ میں شدت اور 2019 کے عام انتخاات کے قریب آنے کے ساتھ ہی حکمراں اور اپوزیشن پارٹیوں کے درمیان لیڈروں کو رجھانے اور ان کی سودے بازی کا عمل تیز ہوگیا ہے۔ دیگر پارٹیوں کے اہم قائدین کو اپنی پارٹی میں شامل کرنے کے لئے مہم شروع کرتے ہوئے بڑی پارٹیوں نے ایک دوسرے پر سبقت لے جانے کی کوشش شروع کی ہے۔ اس سلسلہ کی کڑی کے طور پر چتور سے تعلق رکھنے والے بی جے پی کے سابق رکن اسمبلی پٹنم سبیا نے آج امراوتی میں چندرا بابو نائیڈو کی موجودگی میں تلگودیشم میں شمولیت اختیار کرلی۔ سبیا کو بی جے پی کا اہم لیڈر مانا جاتا ہے اب وہ تلگودیشم کے رکن بن گئے ہیں۔ انہوں نے چیف منسٹر کی رہائش گاہ تک جلوس کی شکل میں پہنچ کر وزیر امرناتھ ریڈی کے ہمراہ چیف منسٹر چندرا بابو نائیڈو سے ملاقات کی اور تلگودیشم میں شامل ہوگئے۔ ان کے ساتھ سابق زیڈ پی سربراہ سریناتھ ریڈی، سابق رکن اسمبلی موہن نے بھی تلگودیشم میں شامل ہونے کا اعلان کیا اسی دوران آندھرا پردیش میں بی جے پی کے لئے ایک اور دھکہ لگا ہے کہ پارٹی کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر کنا لکشمی نارائنا بھی بہت جلد وائی ایس آر کانگریس میں شامل ہوں گے۔

TOPPOPULARRECENT