Thursday , February 22 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش میں کسانوں کے خود کشی واقعات پر اظہار تشویش

آندھرا پردیش میں کسانوں کے خود کشی واقعات پر اظہار تشویش

متاثرہ کسانوں سے بات چیت ، زرعی شعبہ میں انقلابی تبدیلی کا تیقن : جگن موہن ریڈی
حیدرآباد ۔ 23 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی جگن موہن ریڈی نے آندھرا پردیش میں کسانوں کی خود کشی پر تشویش کا اظہار کیا ۔ ہاسپٹل میں زیر علاج متاثرہ کسانوں سے ٹیلی فون پر بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ایک سال تک انتظار کریں ۔ وائی ایس آر کانگریس پارٹی کی حکومت تشکیل پانے کے بعد زرعی شعبہ میں انقلابی تبدیلیاں لانے اور کسانوں میں خوشحالی لانے کے اقدامات کرنے کا تیقن دیا ۔ ضلع کرشنا کے سننا پولیس اسٹیشن کے احاطہ میں کسانوں نے خود کشی کی جنہیں فوری مقامی ہاسپٹل منتقل کردیا ۔ اطلاع ملتے ہی پدیاترا کرنے والے جگن موہن ریڈی نے صدمہ کا اظہار کیا اور ہاسپٹل میں زیر علاج کسانوں سے ٹیلی فون پر بات چیت کرتے ہوئے انہیں انتہائی اقدام نہ کرنے کا مشورہ دیا ۔ صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی نے کہا کہ تلگو دیشم حکومت کی الٹی گنتی شروع ہوگئی ہے ۔ ایک سال بعد وائی ایس آر کانگریس پارٹی بھاری اکثریت سے اقتدار حاصل کرے گی تب وہ کسانوں کے تمام مسائل کو حل کریں گے تب تک کسان صبر و تحمل کا مظاہرہ کریں ۔ انہوں نے کہاکہ کسانوں سے اظہار ہمدردی کرنے اور ان کے مسائل حل کرنے کے بجائے تلگو دیشم حکومت انہیں ہراساں و پریشان کررہی ہے ۔ پدیاترا کے دوران کئی کسانوں نے ان سے ملاقات کی اور اپنے مسائل پر تحریری طور پر یادداشت پیش کی ہے ۔ جگن موہن ریڈی نے کہا کہ کسانوں کے مسائل کو حل کرنے کے لیے وہ گذشتہ دیڑھ سال سے جدوجہد کررہے ہیں ۔ نقلی بیج سربراہ ہونے کی سائنسدانوں نے بھی تصدیق کی ہے ۔ فی ایکڑ اراضی کو 91 ہزار روپئے جاری کرنے کے کلکٹرس کو احکامات جاری کئے گئے ۔ مگر فنڈز کی آج تک اجرائی نہیں ہوئی ہے ۔ جس سے کسانوں میں مایوسی پائی جاتی ہے ۔ حکومت انہیں اعتماد میں لینے کی کوشش بھی نہیں کی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT