Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش میں 21 دن میں پراجیکٹس کی منظوریاں

آندھرا پردیش میں 21 دن میں پراجیکٹس کی منظوریاں

چیف منسٹر نائیڈو کا پارٹنر شپ سمٹ سے خطاب ۔ ارون جیٹلی اور نرملا سیتا رمن کی بھی مخاطبت
وشاکھا پٹنم 10 جنوری ( پی ٹی آئی ) اندرون ملک اور بیرونی ممالک کے سرمایہ کاروں کو آندھرا پردیش میں سرمایہ کاری کیلئے مدعو کرتے ہوئے چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے آج کہا کہ ریاستی حکام تمام پراجیکٹس کی منظوری کو مختصر مدت میں اور شفاف انداز میں یقینی بنانے کیلئے ہر ممکن اقدمات کرینگے ۔ سی آئی آئی کی پارٹنرشپ چوٹی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ ریاست میں ہنرمند مزدور ‘ برقی ‘ اراضی ‘ پانی اور قدرتی وسائل جیسے تمام ضروریات دستیاب ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ سرمایہ کاروں کو اس بات کا تیقن دینا چاہتے ہیں کہ انہیں جو کوئی مسئلہ درپیش ہوگا اسے انتہائی شفاف انداز میں اندرون 21 یوم کلئیر کردیا جائیگا ۔ تمام منظوریاں اتنے عرصہ میں شفاف انداز میں دیدی جائیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست آندھرا پردیش کو سال 2022 تک ملک کی ٹاپ تین ریاستوں میں جگہ مل جائیگی اور 2029 تک آندھرا پردیش میں معیشت اور خوشحالی کے مسئلہ میں اولین مقام حاصل ہوجائیگا اور 2050 تک ریاست دنیا میں اولین پسندیدہ مقام بن جائیگی ۔ مسٹر نائیڈو نے وزیر فینانس ارون جیٹلی اور مرکزی وزیر تجارت نرملا سیتارامن سے کہا کہ وہ ریاست کی مدد کریں کیونکہ ریاست کو ٹیکس اور فینانس کے مسائل میں تقسیم کے بعد سے مسائل کا سامنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت سرمایہ کاروں کو سہولیات فراہم کرنے کے مقصد سے اجازت ناموں اور منظوریوں کی تعداد کو کم سے کم کرنے پر توجہ دے رہی ہے ۔ انہوں نے سرمایہ کاروں سے کہا کہ وہ ریاست کے مجوزہ نئے دارالحکومت میں اپنے دفاتر قائم کریں اور اس چوٹی کانفرنس سے واپسی سے قبل ہی یادداشت مفاہمت پر دستخط کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ بہتر حکمرانی فراہم کرینگے ‘ طریقہ کار کو سہل بنائیں گے ۔ اگر سرمایہ کار آندھرا پردیش میں سرمایہ کاری کرینگے تو انہیں کسی نقصان کا سامنا کرنا نہیں پڑیگا بلکہ انہیں زبردست فائدہ ہوگا ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ارون جیٹلی نے کہا کہ مرکزی حکومت نے جو کچھ بھی وعدے کئے ہیں ان میں وہ ریاستی حکومت کے ساتھ ہے ۔ قدم بہ قدم تمام اقدامات کو یقینی بنایا جائیگا اور ہر ممکن مدد فراہم کی جائیگی تاکہ آندھرا پردیش کو ملک کی بہترین ریاستوں میں جگہ بنانے کا موقع فراہم کیا جاسکے ۔ نرملا سیتارامن نے بھی اپنے خطاب میں کہا کہ مرکزی حکومت ‘ پوری طرح سے ریاستی حکومت کے ساتھ مل کر کام کریگی اور بجٹ و منصوبہ بندی میں بھی ان ریاستوں کی خوشحالی کو ذہن میں رکھا جائیگا ۔ سیتارامن نے کہا کہ اگر وزیر فینانس اور وزیر اعظم دو ہندسی ترقی کی امید کر رہے ہیں تو یہ ملک کے ہر کونے میں ہونی چاہئے ۔ اور ایسا اسی وقت ہوسکتا ہے جب آندھرا پردیش جیسی ریاستوں کی مدد کی جائے جہاں دریائیں ہیں ‘ معدنیات ہیں اور انسانی وسائل بھی دستیاب ہیں۔ اس چوٹی کانفرنس میں تقریبا 45 ممالک کے مندوبین اور شرکا حصہ لے رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT