Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش وقف بورڈ ملازمین تنخواہوں سے محروم

آندھرا پردیش وقف بورڈ ملازمین تنخواہوں سے محروم

تلنگانہ وقف بورڈ ذمہ دار ، فنڈس کی عدم اجرائی کا شاخسانہ
حیدرآباد۔/12فبروری، ( سیاست نیوز) آندھرا پردیش وقف بورڈ کو گزشتہ تین ماہ سے ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی میں دشواریوں کا سامنا ہے اوراس صورتحال کیلئے تلنگانہ وقف بورڈ ذمہ دار ہے۔ وقف بورڈ کی دونوں ریاستوں میں تقسیم کو چار ماہ مکمل ہوگئے لیکن تلنگانہ وقف بورڈ کی جانب سے آندھرا پردیش وقف بورڈ کو فنڈز کا حصہ جاری نہیں کیا گیا۔ ریاست کی تقسیم سے قبل وقف بورڈ کے فکسڈ ڈپازٹس اور دیگر رقومات کی تقسیم کے سلسلہ میں مرکزی حکومت نے رہنمایانہ خطوط جاری کئے۔ اس کے باوجود تلنگانہ وقف بورڈ کے اعلیٰ عہدیدار رقم کی تقسیم میں تاخیر کررہے ہیں۔ اس کے لئے مختلف بہانے تلاش کئے جارہے ہیں۔ آندھرا پردیش کے عہدیداروں نے فنڈز کی تقسیم کیلئے سکریٹری اقلیتی بہبود تلنگانہ سے بارہا نمائندگی کی اس کے علاوہ مرکزی حکومت کو بھی توجہ دلائی گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ مرکز کی جانب سے تلنگانہ حکومت کی توجہ دہانی کے باوجود آج تک فنڈز تقسیم نہیں کئے گئے جس کے باعث آندھرا پردیش وقف بورڈ مالی بحران کا شکار ہوچکا ہے۔ تنخواہوں کی ادائیگی میں دشواریوں کا سامنا کرنے والے تلنگانہ وقف بورڈ نے وقف فنڈ اور درگاہوں سے حاصل ہونے والی آمدنی سے تنخواہیں ادا کی ہیں۔ اگر فنڈز کی تقسیم میں مزید تاخیر ہوتی ہے تو آندھرا پردیش وقف بورڈ بحران کا شکارہوجائیگا۔ اسی دوران ڈائرکٹر اقلیتی بہبود و اسپیشل آفیسر وقف بورڈ آندھرا پردیش شیخ  محمد اقبال نے اوقافی جائیدادوں اور اراضیات کے تحفظ کیلئے کئی اہم فیصلے کئے ہیں۔ انہوں نے اہم جائیدادوں کی ترقی کیلئے حکومت کو منصوبہ پیش کیا ہے تاکہ خانگی کمپنیوں کو لیز پر حوالے کرتے ہوئے بورڈ کی آمدنی میں اضافہ کیا جاسکے۔ شیخ محمد اقبال نے ناجائز قابضین کے خلاف سخت کارروائیوں کا آغاز کیا اور گزشتہ دو ماہ کے دوران 80سے زائد مقدمات درج کئے گئے۔ ناجائز قابضین کے خلاف کارروائیوں میں شیخ محمد اقبال نے برسر اقتدار تلگودیشم پارٹی سے تعلق رکھنے والے قائدین کو بھی نہیں بخشا ہے۔ انہوں نے مقدمات درج کرتے ہوئے چیف منسٹر چندرا بابو نائیڈو کو تفصیلات روانہ کیں تاکہ وہ پارٹی قائدین کو ناجائز قبضہ سے دستبرداری کی ہدایت دیں۔ برسراقتدار پارٹی سے دباؤ کے باوجود شیخ محمد اقبال نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے اقدامات کو جاری رکھا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ وقف اراضی کو ریونیو ریکارڈ میں شامل کرنے کیلئے شیخ محمد اقبال مختلف اضلاع کا دورہ کرتے ہوئے ضلع کلکٹرس سے ملاقات کررہے ہیں۔ واضح رہے کہ شیخ محمد اقبال نے تقسیم ریاست سے قبل وقف بورڈ کے اسپیشل آفیسر کی حیثیت سے حیدرآباد اور اس کے نواح میں کئی اہم اوقافی جائیدادوں کے قابضین کے خلاف کارروائی کا آغاز کیا تھا۔ انہوں نے کئی اہم جائیدادوں کو وقف بورڈ کی راست نگرانی میں حاصل کیا جس سے بورڈ کی آمدنی میں اضافہ ہوا ہے۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ تلنگانہ وقف بورڈ کے موجودہ عہدیدار بھی شیخ محمد اقبال کی طرح دیانتداری اور سنجیدگی کے ساتھ کام کریں تاکہ اللہ کیلئے وقف کروڑہا روپئے مالیتی جائیدادوں کا تحفظ ممکن ہوسکے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT