Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش کو خصوصی موقف دِلانے میں چندرا بابو ناکام

آندھرا پردیش کو خصوصی موقف دِلانے میں چندرا بابو ناکام

حیدرآباد /4 فروری (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن آندھرا پردیش کونسل سی رام چندریا نے وزیر اعظم نریندر مودی کے ناراض ہونے کے ڈر سے آندھرا پردیش کے لئے خصوصی موقف حاصل نہ کرنے کا چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو پر الزام عائد کیا۔ آج یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ تقسیم ریاست کے بل میں کانگریس زیر قیادت یو پی اے حکومت

حیدرآباد /4 فروری (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن آندھرا پردیش کونسل سی رام چندریا نے وزیر اعظم نریندر مودی کے ناراض ہونے کے ڈر سے آندھرا پردیش کے لئے خصوصی موقف حاصل نہ کرنے کا چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو پر الزام عائد کیا۔ آج یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ تقسیم ریاست کے بل میں کانگریس زیر قیادت یو پی اے حکومت نے آندھرا پردیش کو 5 سال تک خصوصی موقف دینے کا اظہار کیا تھا، مگر اس وقت بی جے پی نے خصوصی موقف کو دس سال کرنے کا مطالبہ کیا تھا اور بی جے پی حکومت تشکیل پانے کی صورت میں آندھرا پردیش کو دس سال تک خصوصی موقف دینے کا وعدہ کیا تھا۔ علاوہ ازیں تلگودیشم۔ بی جے پی اتحاد کے بعد انتخابی مہم کے دوران نریندر مودی نے آندھرا پردیش کی ترقی کے لئے مرکز کی جانب سے ہر ممکن تائید کا اعلان کیا تھا۔ انھوں نے کہا کہ نریندر مودی بحیثیت وزیر اعظم اور چندرا بابو نائیڈو بحیثیت چیف منسٹر آندھرا پردیش 9 ماہ مکمل کرچکے ہیں، لیکن مرکزی اور ریاستی حکومتیں آندھرا پردیش کو ترقی دینے میں پوری طرح ناکام ہیں۔ انھوں نے کہا کہ این ڈی اے کی حلیف تلگودیشم مرکزی حکومت پر دباؤ ڈالنے میں ناکام ہے، جب کہ چندرا بابو نائیڈو، وزیر اعظم کی ناراضگی سے بچنے کے لئے مرکز پر دباؤ ڈالنے سے گریز کرکے آندھرا پردیش کے مفادات کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ مسٹر چندریا نے کہا کہ ریاست کے عوام چندرا بابو نائیڈو سے سخت ناراض ہیں، جب کہ کانگریس نے آندھرا پردیش کو خصوصی موقف فراہم کرنے کے لئے مرکز پر دباؤ ڈالنے کے علاوہ عوامی شعور بیدار کرنے اور دستخطی مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلے میں ایک کروڑ دستخط حاصل کرکے مرکزی حکومت کو روانہ کیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ آندھرا پردیش میں بی جے پی سے تلگودیشم کو خطرہ بڑھ جانے کے خوف سے مسٹر نائیڈو خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں، جس کی کانگریس پارٹی سخت مذمت کرتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT