Tuesday , April 24 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھرا کے ارکان پارلیمنٹ میں اتحاد کا فقدان

آندھرا کے ارکان پارلیمنٹ میں اتحاد کا فقدان

خصوصی موقف نہ دینے پر مرکز پر تنقید ۔ وجئے اماں کا خطاب
نئی دہلی 8 اپریل ( پی ٹی آئی ) آندھرا پردیش کے ارکان پارلیمنٹ میں ریاست کو خصوصی موقف کے مسئلہ پر اتفاق رائے نہ ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے وائی ایس آر کانگریس نے آج کہا کہ مرکزی حکومت اسی عدم اتحاد کی وجہ سے اس مسئلہ کو اہمیت نہیں دے رہی ہے ۔ وائی ایس آر کانگریس کی اعزازی صدر وائی ایس وجئے اماں نے ریاست کے ارکان پارلیمنٹ میں عدم اتحاد پر تشویش کا اظہار کیا ۔ انہوں نے پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ سے یہاں ملاقات کی جو اے پی بھون میں غیر معینہ مدت کی بھوک ہڑتال کر رہے ہیں۔ وجئے اماں آنجہانی چیف منسٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کی اہلیہ اور موجودہ پارٹی صدر جگن موہن ریڈی کی والدہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں غیر معینہ مدت کی ہڑتالیں اتنی اثردار رہیں کہ اس پر حکومتوں کو توجہ دینے پر مجبور ہونا پڑا اور انہوں نے اس پر رد عمل ظاہر کیا تھا ۔ آج اپوزیشن جماعتوں کی کئی کوششوں کے باوجود ایسا کچھ نہیں ہو رہا ہے ۔ انہوں نے مرکز کی جانب سے ریاست کو خصوصی موقف دینے سے گریز کا حوالہ دیتے ہوئے یہ بات کہی ۔ انہوں نیک ہا کہ وائی ایس راج شیکھر ریڈی کہا کرتے تھے کہ متحدہ آندھرا پردیش کی آواز زیادہ مستحکم ہوگی کیونکہ یہاں زیادہ عوامی نمائندہ ہونگے ۔ ایک چھوٹی ریاست سے درکار دباؤ نہیں ڈالا جاسکتا ۔ تاہم ریاست کو بڑی تیزی سے تقسیم کردیا گیا اور آندھرا پردیش سے جو وعدے کئے گئے تھے انہیں ابھی تک پورا نہیں کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات یہ ہے کہ آج آندھرا پردیش کے 25 ارکان پارلیمنٹ ایک کاز کیلئے متحد نہیں ہیو پا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ چاہتی ہیں کہ چندرا بابو نائیڈو تلگودیشم کے ایم پیز کو بھی بھوک ہڑتال میں شرکت کرنے کی ہدایت دیں۔

TOPPOPULARRECENT