Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / آٹوز اور ٹیکسیوں میں جی پی آر ایس لازمی:محکمہ ٹرانسپورٹ

آٹوز اور ٹیکسیوں میں جی پی آر ایس لازمی:محکمہ ٹرانسپورٹ

خواتین کے تحفظ کیلئے حکومت تلنگانہ کے اقدامات گاڑیوں میں ڈرائیور کی تصویر ‘ فون نمبر وپتہ درج کرنے ایک ہفتے کی مہلت ‘ خلاف ورزی پر قانونی کارروائی

خواتین کے تحفظ کیلئے حکومت تلنگانہ کے اقدامات

گاڑیوں میں ڈرائیور کی تصویر ‘ فون نمبر وپتہ درج کرنے ایک ہفتے کی مہلت ‘ خلاف ورزی پر قانونی کارروائی
حیدرآباد 27 نومبر ( سیاست نیوز ) خواتین کے تحفظ کو یقینی بنانے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی ہدایات کے بعد تلنگانہ روڈ ٹرانسپورٹ اتھاریٹی کی جانب سے ٹیکسی اور آٹو ڈرائیورس کیلئے سخت ترین موٹر وہیکل قوانین کے نفاذ کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ علاوہ ازیں ٹیکسی کیبس کیلئے ایک ہی کلر کو یقینی بنایا جائیگا تاکہ ان کی شناخت ہوسکے اور ایک ترمیمی بل کے ذریعہ آٹوز اور ٹیکسیوں میں جی پی آر ایس سسٹم متعارف کروانے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ جوائنٹ ٹرانسپورٹ کمشنر مسٹر ٹی رگھوناتھ نے سیاست سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی جانب سے ٹیکسیوں اور آٹوز میں جی پی آر ایس کو لازمی بنانے قوانین میں ترمیم کریگی ۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ حکومت تلنگانہ کی جانب سے خواتین کے تحفظ پر خاص توجہ دی جا رہی ہے اس لئے اس طرح کے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ مسز پونم مالکنڈیا پرنسپل سکریٹری برائے حکومت نے تمام اہم مقامات جیسے سنیما تھیٹرس ‘ ٹرانسپورٹس اور مالس وغیرہ میں خواتین کے تحفظ کیلئے مختلف سفارشات پیش کی ہیں۔ ایسے میں خواتین کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے محکمہ ٹرانسپورٹ کی جانب سے آٹو رکشا اور ٹیکسیوں میں ڈرائیورس کی مکمل تفصیلات ان کا فون نمبر اور پتہ ڈسپلے کرنے کیلئے کہا جارہا ہے ۔ واضح رہے کہ پہلے ہی سے موٹر وہیکلس ایکٹ کے تحت ایک دفہع ایسا ہے جس کے تحت آٹو ڈرائیور کیلئے یہ ضروری ہے کہ وہ اپنا فون نمبر اور پتہ آٹو میں ڈسپلے کرے تاہم اس پر عمل نہیں کیا جاتا ۔ تاہم اب تلنگانہ روڈ ٹرانسپورٹ اتھاریٹی اس قانون پر عمل آوری کو یقینی بنانے میں کوئی کسر باقی نہیں رکھے گی ۔ اب اس بات کو یقینی بنایا جائیگا کہ ڈرائیور کی نشست کی پشت پر ڈرائیور کی تصویر ‘ اس کا فون نمبر اور پتہ و دیگر تفصیلات درج کی جائیں گی ۔ ان تفصیلات کو آٹو یا ٹیکسی میں سفر کرنے والی خواتین تصویر اور دیگر تفصیلات پر مشتمل اطلاعات اپنے افراد خاندان یا دوستوں کو روانہ کرسکیں یا پھر واٹس اپ پر اسے اپ لوڈ کردیا جائے تاکہ ان کے رشتہ دار اور اقربا خواتین کے تحفظ کو یقینی بناسکیں۔ مسٹر رگھو ناتھ نے آٹو اور ٹیکسی ڈرائیورس سے کہا ہے کہ وہ یہ تمام اطلاعات اپنے آٹو یا ٹیکسیوں میں درج کریں بصورت دیگر انفورسمنٹ مہم کے دوران ان پر چالانات کئے جائیں گے ۔ کہا گیا ہے کہ تمام آٹوز اور ٹیکسیوں میں یہ تمام تفصیلات پیش کرنے سلاٹ لگائیں ۔ جس وقت جو ڈرائیور گاڑی ڈرائیو کر رہا ہو اس کی تفصیلات سلاٹ پر پیش کی جانی چاہئیں۔ اس کام کیلئے ایک ہفتے کا وقت دیا جا رہا ہے ۔ ایک ہفتے کے بعد پولیس اور ٹرانسپورٹ اتھاریٹی کی جانب سے انفورسمنٹ مہم شروع کی جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ آر ٹی اے کی جانب سے ٹیکسیوں کی خدمات کو بھی بہتر بنایا جائیگا ۔ ان سے کہا جائیگا کہ تمام ٹیکسیوں کا رنگ ایک ہی ہو اور ان کی چھتوں پر روشنی کے ساتھ ایک بورڈ لگائیں جس پر ’’ ٹیکسی ‘‘ تحریر ہو ۔ اس کے علاوہ آٹوز پر بھی ’’ کرایہ کیلئے ‘‘ تحریر کیا جانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر گاڑیوں کے نئے مالکین پرانے مالکین کے پرمٹ کو برقرار رکھے ہوئے ہیں تو انہیں آر ٹی اے عہدیداروں سے مشورہ لینا چاہئے ۔ نئے مالکین کو جرمانہ کیلئے آر ٹی اے آفس طلب نہیں کیا جا رہا ہے بلکہ صرف رجسٹریشن کے مقصد سے طلب کیا جا رہا ہے ۔ ہر آر ٹی اے آفس میں آٹوز اور ٹیکسیوں کیلئے ایک خصوصی ہیلپ ڈیسک قرائم کیا جارہا ہے ۔ جن ڈرائیورس کے پاس لائسنس نہیں ہے وہ آلیہ کالج بشیر باغ میں داخلہ لے سکتے ہیں اور وہاں طلبا کی حیثیت سے رجسٹریشن کرواتے ہوئے دسویں جماعت کا سرٹیفیکٹ حاصل کرسکتے ہیں ۔ کئی آٹو ڈرائیورس کے پاس دسویں کے سرٹیفیکٹ کی عدم موجودگی کی وجہ سے لائسنس بھی نہیں ہے ۔ حکومت تلنگانہ نے ایسے اسکولس کھولے ہیں جہاں ڈرائیورس اپنے رجسٹریشن کے ذریعہ دسویں کا سرٹیفیکٹ حاصل کرسکتے ہیں۔ تعلیمی صداقتناموں سے انہیں نہ صرف لائسنس بلکہ قرض یا دیگر سہولتوں کیلئے بھی مدد مل سکتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT