Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / ائمہ و موذنین کے اعزازیہ کے بقایا جات کی عنقریب اجرائی

ائمہ و موذنین کے اعزازیہ کے بقایا جات کی عنقریب اجرائی

اقلیتی بہبود کے لیے 25 کروڑ روپئے جاری کرنے سے اتفاق ، ڈپٹی چیف منسٹر کا جائزہ اجلاس
حیدرآباد۔/18جون، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ اندرون ایک ہفتہ ائمہ و مؤذنین کے اعزازیہ کے تمام بقایاجات جاری کردیئے جائیں۔ اس کے علاوہ ’’ اوون یور آٹو اسکیم ‘‘ کے تحت باقی 1300 آٹو رکشا فوری طور پر جاری کئے جائیں۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے آج اقلیتی بہبود کے تمام اداروں کی کارکردگی کا اعلیٰ سطحی اجلاس میں جائزہ لیا اور سکریٹری فینانس رام کرشنا کو طلب کرتے ہوئے اقلیتی بجٹ کی اجرائی میں تاخیر کی وجوہات دریافت کی۔ سکریٹری فینانس نے پیر تک اقلیتی بہبود کیلئے 25کروڑ روپئے جاری کرنے سے اتفاق کیا ہے جس میں آٹو اسکیم، افطار پارٹی اور اردو اکیڈیمی کا بجٹ شامل ہوگا۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی نے اسکیمات کے آغاز میں تاخیر کی وجوہات دریافت کی جس پر عہدیداروں نے بتایا کہ جاریہ سال بجٹ کے پہلے سہ ماہی کی رقومات ابھی تک جاری نہیں کی گئیں۔ انہوں نے اس بات پر حیرت کا اظہار کیا کہ کمپیوٹرسنٹرس اور لائبریریز کے ملازمین گذشتہ 4 ماہ سے تنخواہوں سے محروم ہیں۔ محمود علی نے تمام ملازمین کی تنخواہیں بقایا جات کے ساتھ فوری جاری کرنے کی ہدایت دی۔ اجلاس میں سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل، منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن بی شفیع اللہ، اسپیشل آفیسر حج کمیٹی و سکریٹری ڈائرکٹر اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور، چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ محمد اسد اللہ، منیجنگ ڈائرکٹر کرسچین فینانس کارپوریشن بی وکٹر اور سروے کمشنر وقف معصومہ بیگم نے شرکت کی۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ اقلیتی اسکیمات کے سلسلہ میں بجٹ کی اجرائی کے مسئلہ پر وہ چیف منسٹر سے نمائندگی کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ آٹو اسکیم پر عمل آوری کیلئے جو 8 کروڑ روپئے درکار ہیں انہیں جلد جاری کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کی دعوت افطار سے قبل ائمہ و مؤذنین کے بقایا جات جاری کردیئے جائیں۔ عہدیداروں نے بتایا کہ 22 جون کو نظام آباد میں چیک جاری کئے جائیں گے۔ کھمم اور کریم نگر کے ماسواء دیگر اضلاع میں اجرائی کا کام جاری ہے۔ عہدیداروں نے بتایا کہ رمضان پیاکیج کے تحت غریب مستحق خاندانوں میں کپڑوں کی تقسیم کا اتوار سے آغاز ہوجائیگا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے مکہ مسجد اور شاہی مسجد کے ملازمین کی تنخواہوں کی ہر ماہ بروقت اجرائی کی ہدایت دی اور کہا کہ سابق میں جس طرح ادائیگی میں تاخیر ہوئی ہے اسے نہیں دہرانا چاہیئے۔ انہوں نے رمضان المبارک کے پیش نظر تنخواہوں کی بروقت اجرائی کی ہدایت دی۔ انہوں نے اقلیتی فینانس کارپوریشن سے سبسیڈی کی اسکیم پر عمل آوری میں تاخیر پر افسوس کا اظہار کیا۔
عہدیداروں نے بجٹ کی کمی کا حوالہ دیا جس پر ڈپٹی چیف منسٹر نے ہدایت دی کہ ایک لاکھ تک کی درخواستوں کی فوری طور پر یکسوئی کردی جائے۔ انہوں نے کہا کہ ترجیحی بنیادوں پر کم قرض سے متعلق درخواستوں کی یکسوئی ہونی چاہیئے اور بجٹ کی اجرائی کے ساتھ ساتھ دیگر درخواستوں پر غور کیا جائے۔ انہوں نے 5اضلاع میں ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسرس کے جلد تقررات کا تیقن دیا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے سکریٹری فینانس کو طلب کرتے ہوئے پہلے سہ ماہی کے بجٹ کیلئے مختلف اداروں کو درکار بجٹ کی تفصیلات سے آگاہ کیا جس پر سکریٹری فینانس نے فوری طور پر 25کروڑ کی اجرائی سے اتفاق کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT