Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / ابتدائی بارش ہی میں نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہونے کی شکایت

ابتدائی بارش ہی میں نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہونے کی شکایت

نالوں کو ڈرینیج نظام کی صفائی کے دعوے غلط ثابت ہوئے ۔ کئی سڑکوں کی حالت بھی ابتر

نالوں کو ڈرینیج نظام کی صفائی کے دعوے غلط ثابت ہوئے ۔ کئی سڑکوں کی حالت بھی ابتر
حیدرآباد 14 جون (سیاست نیوز) دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں گزشتہ تین روز سے جاری ہلکی و تیز بارش سے کئی نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہونے کی شکایات عام ہونے لگی ہیں۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں نے اِس بات کے دعوے کئے تھے کہ مانسون کی آمد سے قبل شہر کے نالوں اور ڈرینج نظام کی صفائی کو یقینی بنایا جائے گا لیکن مانسون کی آمد کے باوجود بیشتر علاقوں میں ڈرینج نظام کی عدم صفائی کے سبب سڑکیں جھیل میں تبدیل ہوتی نظر آرہی ہیں۔ شہر کی اہم سڑکوں پر بھی بارش کے پانی کے سبب راہگیروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے اور مختلف علاقوں میں پانی جمع ہوجانے کے باعث ٹریفک جام معمول بنتا جارہا ہے۔ پرانے شہر کے علاقوں میں تاڑبن، کالاپتھر کے اطراف و اکناف کے علاقوں میں بارش کا پانی جمع ہونے اور گھروں میں داخل ہونے کی شکایات موصول ہورہی ہیں لیکن اِس کے باوجود صفائی عملہ کی جانب سے ڈرینج کی صفائی کے انتظامات یقینی بنانے میں کوتاہی کی جارہی ہے۔ جی ایچ ایم سی نے مانسون کی آمد سے قبل بارش کے پانی کی نکاسی کے نظام کو بہتر بنانے کے اقدامات کا اعلان کیا تھا لیکن تاحال بارش کے پانی کی نکاسی کے انتظامات کو بہتر بنانے کے لئے نالوں کی صفائی، ڈرینج کی صفائی کیلئے بجٹ کی اجرائی عمل میں نہیں لائی گئی بلکہ گزشتہ یوم شہر کے مختلف مقامات جہاں پر پانی جمع ہونے کی شکایت عام ہے اُن علاقوں کی حالت کو بہتر بنانے کے لئے بجٹ منظور کیا گیا ہے۔ دونوں شہروں میں میٹرو ریل کے تعمیراتی کاموں کے سبب بارش کا پانی کھودے گئے گڑھوں میں جمع ہورہا ہے جس کی بروقت نکاسی کو یقینی بنایا جانا ناگزیر ہے۔ چونکہ گڑھوں میں پانی جمع ہونے سے حادثات کے خدشات میں اضافہ ہوتا ہے۔ پرانے شہر کے بعض علاقوں میں جہاں سڑکوں کے تعمیراتی کام جاری ہیں بارش کے سبب وہ سڑکیں بھی متاثر ہوئی ہیں اور کوٹلہ عالیجاہ سے سلطان شاہی براہ بی بی بازار جانے والی سڑک کی حالت انتہائی مخدوش ہوچکی ہے اور جو گڑھے کھودے گئے تھے اُنھیں صرف مٹی سے بند کیا گیا تھا۔ گزشتہ تین یوم کی بارش کے دوران وہ مٹی کیچڑ میں تبدیل ہوگئی ہے اور زمین دھنسنے لگی ہے۔ ایسی صورت میں اگر کوئی ہیوی وہیکل وہاں سے گزرتی ہے تو پھنس جانے کا اندیشہ ہے۔ اِسی لئے مٹی سے بند کی گئی سڑکوں کی فوری طور پر مرمت کو یقینی بنائے جانے کی ضرورت ہے ۔ بلدیہ حیدرآباد کے حکام کو چاہئے کہ وہ فوری اُن علاقوں کی نشاندہی کریں جہاں بارش کا پانی جمع ہونے سے نقصانات کا اندیشہ ہے۔ اِن علاقوں میں بارش کے پانی کی نکاسی کو یقینی بنانے عملی اقدامات کی ضرورت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT