Tuesday , July 17 2018
Home / دنیا / ابوبکر البغدادی فضائی حملوںمیں زخمی ؟

ابوبکر البغدادی فضائی حملوںمیں زخمی ؟

دولت اسلامیہ کے سربراہ کی امریکی اور روسی فضائی حملوں میں ہلاکت کے متضاد دعوے

واشنگٹن ۔ 12 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) دولت اسلامیہ کے نامور قائد ابوبکر البغدادی گذشتہ سال مئی کے فضائی حملوں میں زخمی ہوگئے تھے اور ہولناک دہشت گرد گروپپر تقریباً 5 ماہ تک ان کا قابو نہیں تھا۔ ایک اخباری اطلاع کے بموجب کئی امریکی عہدیداروں کے حوالے سے سی این این نے خبر دی ہیکہ امریکی محکمہ سراغ رسانی کے تخمینہ کے بموجب دنیا کے انتہائی مطلوب شخص رقہ کے قریب ملک شام میں ماہ مئی میں میزائل حملہ سے زخمی ہوگئے تھے۔ یہ تخمینہ ان اطلاعات پر مبنی ہے جو دولت اسلامیہ کے قیدیوں اور شام میں پناہ گزین افراد نے فضائی حملوں کے بعد بیانات دیئے تھے۔ البغدادی کے زخم مہلک نہیں تھے لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہیکہ انہوں نے گروپ کی روزانہ کارروائیوں کی کمان جاری رکھی تھی۔ اطلاع کے بموجب اس وقت دولت اسلامیہ پر سے ان کا کنٹرول تقریباً ختم ہوچکا تھا جبکہ عراق کے شہر موصل میں اور خود ساختہ دارالحکومت رقہ میں تقریباً کئی مہینوں تک امریکہ کی تائید یافتہ فوجوں نے محاصرہ کیا تھا۔ ابھی تک اس بات کی وضاحت نہیں ہوسکی کہ کیا البغدادی اس فضائی حملہ میں زخمی ہوئے تھے یا پھر اس سے علاقہ میں مہلک تباہی ہوئی تھی۔ خبر کے بموجب یہ بھی واضح نہیں ہوسکا کہ میزائل حملہ کس نے کیا تھا۔ امریکی عہدیداروں کا کہنا ہیکہ اتحادی فوجوں کا طیارہ اس حملہ میں ملوث تھا یا پھر ابوبکر البغدادی روسی میزائل حملہ میں زخمی ہوئے تھے۔ رقہ میں روس نے کئی مقامات پر فضائی حملے کئے ہیں۔ ان حملوں کا کوئی وقت مقرر نہیں تھا۔ امریکہ نہیں جانتا کہ البغدادی امریکی حملہ میں زخمی ہوئے تھے یا روسی حملہ میں۔ سمجھا جاتا ہیکہ فضائی حملے اس تاریخ کے قریب ماہ جون میں روسی فوج نے کئے تھے۔ ان کا دعویٰ ہیکہ انہوں نے دولت اسلامیہ کے قائد کو زخمی کردیا تھا۔ اس وقت روس کی وزارت دفاع نے کہا تھا کہ ان اطلاعات کے بارے میں تحقیقات کی جارہی ہیں کہ البغدادی 28 مئی کو فضائی حملوں میں رقہ کے مضافات میں ہلاک ہوگئے تھے۔ دولت اسلامیہ کی بنیادی حکمت عملی جسے امریکی تائید یافتہ افواج نے اکٹوبر میں پسپائی اختیارکی تھی، یہ تھی کہ کامیابی کیلئے پسپائی ضروری ہے۔ تجزیہ نگاروں نے البغدادی کی موت کی اطلاعات کے وقت انتباہ دیا تھا کہ اس کو صرف امکان قرار دیا جانا چاہئے کیونکہ حملوں میں البغدادی کی موت کی خبریں قبل ازیں غلط ثابت ہوچکی ہیں۔ البغدادی آخری بار جولائی 2014ء میں موصل کی مسجد الحوری میں منظرعام پر آئے تھے۔ اس علاقہ پر عراق کی فوج نے گذشتہ سال جون میں اپنا قبضہ بحال کرلیا تھا۔ اس وقت سے اب تک دولت اسلامیہ نے مختلف آڈیو پیغام جاری کئے ہیں جو اس کا دعویٰ ہیکہ البغدادی کی آواز میں ہیں۔ حال ہی میں گذشتہ سال ستمبر میں آڈیو پیغام جاری کیا گیا تھا جس میں واقعات کا حوالہ بھی تھا جس سے ظاہر ہوتا ہیکہ البغدادی نے روسی دعوؤں کے بعد کہ وہ ہلاک ہوچکے ہیں، یہ پیغام ریکارڈ کروایا تھا۔

TOPPOPULARRECENT