Monday , December 18 2017
Home / سیاسیات / اتراکھنڈ میں عدالتی فیصلہ کا بے چینی سے انتظار

اتراکھنڈ میں عدالتی فیصلہ کا بے چینی سے انتظار

مختلف درخواستوں کی جلد سماعت، کانگریس و بی جے پی فکرمند
دہرہ دون ؍ نینی تال ۔ 4 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس اور بی جے پی کو اتراکھنڈ میں صدر راج کے نفاذ سے متعلق دو بڑی درخواستوں پر ہائیکورٹ کے فیصلہ کا بے چینی سے انتظار ہے۔ ان درخواستوں پر سماعت جمعرات کو ہوگی اور دونوں جماعتوں نے اپنے ارکان کو متحد رکھنے کی کوشش تیز کردی ہیں۔ ہائیکورٹ کی ڈیویژن بنچ مرکز کی دائر کردہ درخواست کی سماعت کرے گی جس میں سنگل بنچ کے حکم کو چیلنج کیا گیا ہے۔ اس سنگل بنچ نے معزول چیف منسٹر ہریش راوت کو ریاستی اسمبلی میں عددی طاقت کا مظاہرہ کرنے کی اجازت دی تھی۔ اس کے علاوہ ایک اور درخواست ہریش راوت نے دائر کرتے ہوئے نااہل باغی کانگریس ارکان اسمبلی کو طاقت کے مظاہرہ کے دوران ووٹ دینے کی اجازت کو چیلنج کیا ہے۔ سنگل بنچ کے حکم کو ان دو درخواستوں پر سماعت کے اختتام تک معرض التواء رکھا گیا ہے۔ مرکز نے سنگل بنچ کے حکم کو چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ جب ریاست میں صدر راج نافذ ہوچکا ہے تب ریاستی اسمبلی میں طاقت کے مظاہرہ کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ ہریش راوت نے سنگل بنچ کے حکم پر نظرثانی کی خواہش کرتے ہوئے نااہل باغی کانگریس ارکان اسمبلی کو عددی طاقت کے مظاہرہ کے دوران ووٹ دینے کی اجازت کے دستوری جواز کے بارے میں سوال اٹھایا۔ مرکزی حکومت کی نمائندگی اٹارنی جنرل مکل روہتگی کررہے ہیں جبکہ سپریم کورٹ کے سینئر وکلاء کپل سبل اور ابھیشیک مانو سنگھوی، ہریش راوت کی طرف سے بحث کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT