اترپردیش اور بہار میں سیلاب کی تباہ کاریاں ، 30 افراد ہلاک

لکھنؤ؍نئی دہلی؍پٹنہ ۔ 17؍اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام)۔ اترپردیش میں سیلاب کی وجہ سے 28 افراد ہلاک ہوگئے جبکہ کئی ندیوں میں پانی خطرے کے نشان سے اوپر بہہ رہا ہے ۔ متاثرہ اضلاع میں تقریباً ایک ہزار دیہاتوں کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے ۔ اسی طرح بہار میں 9 اضلاع سیلاب سے بری طرح متاثر ہیں اور دو افراد ہلاک ہوچکے ہیں ۔ سیلاب کی وجہ سے تقریباً 4 لاکھ افراد

لکھنؤ؍نئی دہلی؍پٹنہ ۔ 17؍اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام)۔ اترپردیش میں سیلاب کی وجہ سے 28 افراد ہلاک ہوگئے جبکہ کئی ندیوں میں پانی خطرے کے نشان سے اوپر بہہ رہا ہے ۔ متاثرہ اضلاع میں تقریباً ایک ہزار دیہاتوں کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے ۔ اسی طرح بہار میں 9 اضلاع سیلاب سے بری طرح متاثر ہیں اور دو افراد ہلاک ہوچکے ہیں ۔ سیلاب کی وجہ سے تقریباً 4 لاکھ افراد متاثر ہیں ۔ چیف منسٹر جتن رام مانجی نے عہدیداروں کے ساتھ آج متاثرہ علاقوں کا فضائی سروے کیا اور عوام کو ممکنہ راحت فراہم کرنے کی ہدایت دی ۔ دربھنگہ ، نالندہ ، پٹنہ اور دیگر کئی اضلاع سیلاب سے متاثر ہیں ۔ تقریباً 38 ہزار افراد کو اب تک 75 ریلیف کیمپوں میں منتقل کیا گیا ۔ اسی طرح اترپردیش میں بہریج ، بلرام پور ، سیتاپور ، فیض آباد ، اعظم گڑھ اور دیگر اضلاع سیلاب سے متاثر ہیں ۔

اترپردیش کی دریاؤں کی سطح آب میں اضافہ سے ریاست کے مختلف علاقوں میں تباہی پھیل گئی جب کہ مرکز نے عدیم المثال سیلابی صورتِ حال کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ دریائے راپتی خطرے کے نشان سے اُوپر بہہ رہی ہے۔ دریائے راپتی کے علاوہ گھاگرا اور سریو دریاؤں کی سطح آب بھی خطرے کے نشان سے اُوپر ہے۔ سطح آب میں اضافہ سے سڑک اور ریل ٹریفک متاثر ہوگئی ہے۔ نئی دہلی میں وزارت برائے آبی وسائل نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ضلع بلرام پور میں دریائے راپتی کی سطح آب 104.62 میٹر یعنی خطرے کے نشان سے 0.63 میٹر بلند ہے۔ مرکزی آبی کمیشن کی رپورٹ کے بموجب سطح آب میں اضافہ سے کاکردھاری اور بھنگا میں تباہی پھیل گئی۔ دریائے راپتی بلرام پور میں اپنی اعظم ترین سطح آب پر ہے جس میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔

دریائے گھاگرا ایودھیا میں ایلگن برج کے پاس خطرے کے نشان سے اُوپر بہہ رہی ہے جب کہ پالیاکلاں کے علاقہ میں دریائے شاردا اور ایودھیا میں دریائے گھاگرا خطرے کے نشان سے اُوپر بہہ رہی ہیں۔ خبروں کے بموجب بہرائچ میں بھاڈا، کوڑیالا اور گیروا دریائیں جو نیپال میں بہتی ہیں، طغیانی سے متاثر ہیں۔ ان سے پانی کی آمد کی وجہ سے بہرائچ میں گھاگرا اور سریو دریاؤں اور شراوستی کے علاقہ میں دریائے راپتی کی سطح آب میں اضافہ ہوا ہے۔ شراوستی میں دریا میں غرق ہوکر 3 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ لکھیم پور میں 2 افراد کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔ 546 دیہاتوں کے ڈھائی لاکھ افراد سیلاب سے متاثر ہیں۔ 250 مکان منہدم ہوچکے ہیں۔ بیرام پور کے تین دیہات تلسی پور، بلرام پور اور اترولا سیلاب کے پانی میں گھرکر باقی ریاست سے کٹ کر الگ تھلگ ہوگئے ہیں۔
مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے یوپی میں سیلاب کی صورتِ حال پر اظہار تشویش کرتے ہوئے کہا کہ مرکز ملک میں کسی بھی مقام پر سیلاب کی صورت میں ہر ممکن مدد اور تعاون کرے گا۔ یوپی سے بھی جہاں سیلاب کی وجہ سے نازک صورتِ حال پیدا ہوگئی ہے، مرکز کی جانب سے بھرپور مدد کی جائے گی۔ مرکز نے یوپی میں بدترین سیلابی صورتِ حال کا انتباہ جاری کردیا ہے اور یہ اس قسم کا اولین انتباہ ہے جو اس ریاست کے لئے جاری کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT