Friday , February 23 2018
Home / Top Stories / اترپردیش میں قانون کی حکمرانی قائم ہوگئی، گورنر رام نائک کا تاثر

اترپردیش میں قانون کی حکمرانی قائم ہوگئی، گورنر رام نائک کا تاثر

جرائم اور لینڈ مافیا سے پاک ماحول فراہم کرنے کی کوششیں جاری، بجٹ سیشن کے آغاز پر اپوزیشن کے شوروغل کے درمیان گورنر کا خطبہ
لکھنؤ 8 فروری (سیاست ڈاٹ کام) گورنر اترپردیش رام نائک کا تاثر ہے کہ ریاست میں قانون کی حکمرانی قائم ہوچلی ہے جس کی مدد سے جرائم اور خوف و ہراس سے پاک ماحول وجود میں آرہا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ حکومت نے مجرمین اور لینڈ مافیا عناصر کے خلاف سخت کارروائی شروع کی ہے۔ سڑک چھاپ فرہادوں کی سرگرمیوں کو روکنے اور خواتین کے لئے محفوظ ماحول فراہم کرنے کے لئے ریاستی حکومت نے اینٹی رومیو اسکواڈس تشکیل دیئے ہیں اور ایک سیل قائم کیا گیا ہے جس سے لڑکیاں اور خواتین رابطہ قائم کرسکتی ہیں اگر اُنھیں فون کرتے ہوئے مخرب اخلاق باتیں کی جائیں یا اس نوعیت کے پیامات بھیجے جائیں۔ گورنر نے یہ باتیں بجٹ سیشن کے افتتاحی روز ریاستی مقننہ کے مشترکہ اجلاس سے اپنے خطاب میں کہی۔ اُنھوں نے بتایا کہ ریاست میں قانون کی حکمرانی قائم کی گئی ہے تاکہ عوام جرائم سے پاک ماحول میں جی سکیں جہاں عدم سلامتی کا احساس نہ ہو۔ اِس ضمن میں مجرمین اور مافیا عناصر کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے جس کے سبب لاء اینڈ آرڈر میں بہتری پیدا ہوئی ہے۔ تاہم گورنر کا خطبہ اور ایک ماہ طویل بجٹ سیشن کی شروعات اپوزیشن کے شوروغل کے درمیان ہوئی جو بالخصوص لاء اینڈ آرڈر کے محاذ پر بے اطمینانی کا اظہار کرتے ہوئے حکومت کی توجہ مبذول کرانے کی کوشش کررہے تھے۔ گورنر کا خطبہ یوگی ادتیہ ناتھ حکومت کے زیرقیادت حکومت کے کاموں کا پالیسی بیان ہوتا ہے۔ اس خطبہ کے درمیان اپوزیشن نے ایسا شور برپا کیا کہ گورنر کی باتیں واضح طور پر ایوان میں سنی نہ جاسکیں۔ جیسے ہی ایوان کی کارروائی شروع ہوئی اپوزیشن کے ارکان ریاست میں لاء اینڈ آرڈر کی صورتحال پر احتجاج کرتے ہوئے نعرے لگانے لگے اور پرشور احتجاج کیا جب گورنر نے کہاکہ جرائم کے معاملہ میں سخت سکیورٹی اقدامات کے مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ اینٹی رومیو اسکواڈس کی تشکیل کا حوالہ دینے پر اپوزیشن بنچوں نے گورنر کے دعوؤں کا مضحکہ اُڑایا کہ ریاست میں خواتین خود کو محفوظ محسوس کررہی ہیں۔ جب گورنر نے یوپی سی او سی بل متعارف کئے جانے کا تذکرہ کیا تو ایس پی ارکان کی طرف سے احتجاج میں شدت پیدا ہوگئی۔ یوگی حکومت مہاراشٹرا کے انسداد دہشت گردی قانون کے خطوط پر یو پی میں بھی ایسا قانون وضع کرنا چاہتی ہے۔ گورنر نے کہاکہ لینڈ مافیا کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے ٹاسک فورس نے ابھی تک 53,584 ہیکٹر اراضی کو ناجائز قبضوں سے پاک کردیا ہے اور 1,426 لینڈ مافیا عناصر کی نشاندہی کرتے ہوئے اُن کے خلاف سخت کارروائی کی جارہی ہے۔ زرعی محاذ کے بارے میں گورنر نے کہاکہ ریاستی حکومت نے کسانوں 8,00,646 کسانوں سے گیہوں کی خریداری کی ہے اور اُنھیں 6,011 کروڑ روپئے ادا کئے گئے ہیں۔ اپنے تقریباً 90 منٹ کے خطاب میں گورنر نے لکھنؤ میں منعقد شدنی انوسٹرس سمٹ کے بارے میں بھی بات کی۔ اُنھوں نے کہاکہ اِس سے سرمایہ کاروں کو سازگار ماحول فراہم کرنے میں مدد ملے گی۔

TOPPOPULARRECENT