اترپردیش پولیس میں مسلمانوں کا تناسب انتہائی کم

لکھنو ۔ 10 فبروری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت اترپردیش کی جانب سے پولیس فورس میں مسلمانوں کی نمائندگی کے تعلق سے حالیہ جاری کردہ اعداد و شمار اقلیتوں کی ترقی کے بارے میں حکومت اور سیاسی جماعتوں کے بلند بانگ دعوؤں کی نفی کرتے ہیں ۔ ان اعداد و شمار کے مطابق اترپردیش پولیس میں صرف 2 فیصد سب انسپکٹرس ، 3 فیصد ہیڈ کانسٹیبلس اور 4 فیصد کانسٹیبلس

لکھنو ۔ 10 فبروری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت اترپردیش کی جانب سے پولیس فورس میں مسلمانوں کی نمائندگی کے تعلق سے حالیہ جاری کردہ اعداد و شمار اقلیتوں کی ترقی کے بارے میں حکومت اور سیاسی جماعتوں کے بلند بانگ دعوؤں کی نفی کرتے ہیں ۔ ان اعداد و شمار کے مطابق اترپردیش پولیس میں صرف 2 فیصد سب انسپکٹرس ، 3 فیصد ہیڈ کانسٹیبلس اور 4 فیصد کانسٹیبلس مسلمان ہیں ۔ ریاستی حکومت نے سماجی کارکن اروشی شرما کے آر ٹی آئی سوال کے جواب میں یہ تفصیلات جاری کی ہے ۔ اس دوران رپورٹ پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے اترپردیش کے وزیر محابس اور سماج وادی پارٹی ترجمان راجیندر چودھری نے کہا کہ ریاستی حکومت مستقبل قریب میں تقررات کے دوران مسلمانوں کی نمائندگی میں اضافہ پر غور کرے گی ۔ انھوں نے دعویٰ کیا کہ محکمہ پولیس میں آج مسلمانوں کی جو بھی نمائندگی ہے وہ صرف اور صرف سماج وادی پارٹی سربراہ ملائم سنگھ یادو کی وجہ سے ہے ۔ انھوں نے بحیثیت چیف منسٹر اس سمت کافی کوششیں کی تھی ۔ راجیندر چودھری نے کہاکہ حکومت کا یہ منصوبہ ہے کہ مسلمانوں کو خاطر خواہ نمائندگی دی جائے ۔

آر ٹی آئی سوال کے جواب میں بتایا گیا کہ 3 جون 2013 تک اترپردیش سیول پولیس ملازمین میں سب انسپکٹرس کی تعداد 10,197 کے منجملہ مسلمان سب انسپکٹرس کی تعداد 236 (2.31 فیصد ) تھی ۔ اسی طرح جملہ 8,224 ہیڈ کانسٹیبل میں مسلم ہیڈ کانسٹیبل کی تعداد 269 یعنی (3.27 فیصد ) اور 1,01,245 کانسٹیبلس کے منجملہ مسلم کانسٹیبلس کی تعداد4,430 (4.37 فیصد ) رہی ۔ اروشی شرما نے گزشتہ سال یہ سوال پوچھا تھا کہ جملہ پولیس عہدیداروں اور ملازمین کی تعداد کتنی ہے اور ان میں مسلمانوں کی تعداد کتنی ہے ۔ اروشی شرما نے کہا کہ اگرچہ کافی پہلے یہاں کانگریس اقتدار پر تھی لیکن گزشتہ دو سے زائد دہوں سے صرف دو جماعتیں سماج وادی پارٹی اوربہوجن سماج پارٹی اقتدار پر رہی ہیں۔ 2005 ء میں مرکز نے مسلمانوں کی سماجی ، معاشی اور تعلیمی پسماندگی کاجائزہ لینے کیلئے راجیندر سچر کمیٹی قائم کی تھی ۔ اترپردیش کی جملہ 20 کروڑ آبادی میں مسلمانوں کی تعداد تقریباً 17 فیصد ہے ۔

TOPPOPULARRECENT