Saturday , December 16 2017
Home / سیاسیات / اترکھنڈ کانگریس کے بحران میں شدت2 سینئیر قائدین کا پارٹی سے اخراج

اترکھنڈ کانگریس کے بحران میں شدت2 سینئیر قائدین کا پارٹی سے اخراج

دہرادون ۔ 21 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام ) : اب جب کہ حکومت اترپردیش کا بحران شدت اختیار کرتے جارہا ہے کانگریس نے آج سابق چیف منسٹر وجئے بہوگنا کے فرزند سکیٹ بہوگنا اور پارٹی کے جوائنٹ سکریٹری انیل گپتا کو مخالف پارٹی سرگرمیوں کی پاداش میں 6 سال کے لیے خارج کردیا ۔ واضح رہے کہ سکیٹ اور دیگر 8 ارکان اسمبلی نے ہریش راوت حکومت کے خلاف بغاوت کردی ہے ۔ صدر پردیش کانگریس کشور اپادھیائے نے بتایا کہ تادیبی کارروائی کمیٹی نے سکیٹ اور گپتا کو اخبارات اور نیوز چیانلوں پر شائع اور نشر ان کے بیانات کی بنیاد پر پارٹی سے خارج کردینے کی سفارش کی ہے ۔ انہوں نے خبردار کیا کہ پارٹی میں ڈسپلن شکنی کو برداشت نہیں کیا جائے گا اور سخت کارروائی کی جائے گی ۔ قبل ازیں اترکھنڈ اسمبلی کے اسپیکر گویند سنگھ کنجول نے کل کانگریس کے 9 باغی ارکان اسمبلی کو نوٹس جاری کرتے ہوئے یہ استفسار کیا تھا کہ انہیں ایوان کے لیے کیوں نا اہل قرار نہ دیا جائے ۔ باغی ارکان اسمبلی نے ایوان میں فینانس بل پر ووٹنگ کے وقت پارٹی وہپ کی خلاف ورزی کی تھی اور مذکورہ نوٹس کا جواب 26 مارچ تک طلب کیا گیا ۔ دریں اثناء بی جے پی کے ریاستی صدر اور اپوزیشن لیڈر اجئے بھٹ نے بتایا کہ اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد کی نوٹس دیدی گئی ہے لہذا انہیں عہدہ سے مستعفی ہوجانا چاہئے ۔ اترکھنڈ میں سیاسی بحران سے قبل 70 رکنی اسمبلی میں کانگریس کے 36 ارکان کو اور انہیں پروگریسیو ڈیموکریٹک فرنٹ کے 6 ارکان کی تائید حاصل تھی ۔ جب کہ اپوزیشن بی جے پی کے 28 ارکان اسمبلی ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT