Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / اجتماعی عصمت ریزی : ٹی آر ایس یوتھ لیڈر اور دیگر 3 گرفتار

اجتماعی عصمت ریزی : ٹی آر ایس یوتھ لیڈر اور دیگر 3 گرفتار

حیدرآباد ۔ 14 ۔ جنوری : ( ایجنسیز ) : ٹی آر ایس یوتھ لیڈر کے ریناکر اور اس کے تین ساتھیوں کو انجینئرنگ سال اول کی طالبہ کی عصمت ریزی کے الزامات پر چہارشنبہ کو گرفتار کیا گیا ۔ پرکال کے ڈپٹی ایس پی ، پی سنجیوا راؤ نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ عصمت ریزی کیس کے ملزم نمبر 1 کے ریناکر کو تحویل میں لیا گیا اور اس نے جرم کا اقبال کیا ۔ ریناکر کے خلاف آئی پی سی کے مختلف سیکشنس کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے ۔ اس کیس میں دیگر تین بی ونے ، اکھیل اور ایم سندیپ کو بھی گرفتار کیا گیا جو 30 دسمبر کو پیش آیاتھا ۔ ان کے خلاف نربھئے ایکٹ کے تحت بھی ایک کیس درج کیا گیا ۔ ریناکر اور اس کے وفاداروں کو پرکال سب کورٹ میں پیش کیا گیا اور انہیں ریمانڈ کو بھیجا گیا ۔ ملزم نمبر ایک کو ورنگل سنٹرل جیل کو بھیجاگیا اور دیگر کو پرکال سب جیل بھیجا گیا ۔ شیام پیٹا منڈل ٹی آر ایس یوتھ ونگ صدر ریناکر نے انجینئرنگ سال اول کی طالبہ کو 30 دسمبر 2015 کو شیام پیٹا منڈلی کے میلارم ولیج میں اس وقت روکا جب وہ اس کے بوائے فرینڈ بی ونے کے ساتھ اس کے مکان کوجارہی تھی ۔ ذرائع کے مطابق ریناکر نے انہیں یہ کہتے ہوئے دھمکی دی کہ پولیس ، میڈیا اور ان کے ارکان خاندان ان کی تلاش کررہے ہیں ۔ کیوں کہ اس جوڑے کا اتہ پتہ معلوم تھا ۔ اس پر متاثرہ لڑکی اور اس کا بوائے فرینڈ اس خبر کو سننے کے بعد ڈر گئے اور اس سے متاثرہ لڑکی کو اس کی رہائش گاہ پر چھوڑنے کے لیے کہا ۔ اس صورتحال کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ریناکر نے راستہ بدل کر اسے پہاڑوں کی طرف لے گیا اور مبینہ طور پر عصمت ریزی کی ۔ اس واقعہ کے بارے میں جان کر ٹی آر ایس پارٹی نے ریناکر کو پارٹی سے نکال دیا اور اس کی ابتدائی رکنیت کو منسوخ کردیا ۔ ایک طویل انٹراگیشن کے بعد پرکال کے ڈپٹی ایس پی سنجیوا راؤ اور سرکل انسپکٹر ملیا نے برطرف شدہ ٹی آر ایس لیڈر ریناکر اور اس کے تین ساتھیوں کو چہارشنبہ کو گرفتار کیا اور عدالت میں پیش کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT