Friday , November 24 2017
Home / ہندوستان / اجمیر میں زائرین کے غسل پر امتناع کے خلاف احتجاج

اجمیر میں زائرین کے غسل پر امتناع کے خلاف احتجاج

اجمیر، 21فروری (سیاست ڈاٹ کام) راجستھان کے اجمیر میں اگلے ماہ شروع ہونے والے خواجہ معین الدین چشتی کے 805ویں سالانہ عرس کے دوران تاریخی انا ساگر جھیل کو آلودگی سے بچانے کے لئے عام زائرین کے غسل کرنے پر انتظامیہ کی طرف سے عائد کی گئی پابندی کی مسلمانوں نے سخت مخالفت کی ہے ۔بی جے پی کے ممبر اسمبلی اور وزیر تعلیم پروفیسر واسودیو دیونانی کی صدارت میں ہوئی میٹنگ میں انا ساگر میں زائرین کے غسل کرنے پر پابندی لگانے کا فیصلہ لیا گیا تھا۔ عرس کی تیاریوں کے سلسلے میں ہوئی اس میٹنگ میں کہا گیا کہ انا ساگر کے گھاٹ پر اس مرتبہ زائرین کے غسل کرنے پر پابندی رہے گی۔اس بات سے ناراض مسلمانوں نے کل سے مخالفت کا سلسلہ شروع کردیا ہے ۔ درگاہ احاطہ میں درگاہ کمیٹی کے خلاف کئے گئے مظاہرہ میں مظاہرین نے وارننگ دی کہ اگر انتظامیہ نے اپنا فیصلہ واپس نہیں لیا تو اس کے خلاف تحریک چلائی جائے گی۔مظاہرین نے دونوں انجمنوں درگاہ کمیٹی اور درگاہ دیوان کے رویہ کی بھی نکتہ چینی کی کہ جب یہ لوگ میٹنگ میں موجود تھے تو اس فیصلے کو خاموشی سے کیوں سنتے رہے ۔ ملک کے دوردراز سے اس عرس میں آنے والے زائرین کہاں غسل کریں گے ۔ مظاہرین نے الزام لگایا کہ آلودگی کے نام پر انا ساگر میں غسل کرنے پر پابندی انتظامیہ کی گندی سوچ کا مظہر ہے ۔انہوں نے کہا کہ زائرین مذہبی رسومات کی ادائیگی کے لئے یہاں غسل اور وضو کرتے ہیں ۔ انتظامیہ کے فیصلے سے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچنا لازمی ہے اور کسی کا پانی روکنا مذہب کے خلاف ہے ۔خیال رہے کہ انتظامیہ نے پشکر کے ریسٹ ہاوس میں زائرین کا قیام بند کررکھا ہے اور انہیں قائد ریسٹ میں قیام کی اجازت دی جاتی ہے ۔ دوسری طرف اس میلے میں آنے والے زائرین قدم زمانے سے ہی انا ساگر کا استعمال کرتے رہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT