Tuesday , December 11 2018

اخلاقی قیادت کے دعویدار ہی حملے میں ملوث

پرامن مستقبل کے موقع کے باوجود حملے، روس کا ردعمل
ماسکو 14 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) روسی وزارت خارجہ نے آج کہاکہ شام پر مغربی فضائی حملے ایک ایسے وقت کئے گئے جب اس ملک کے پاس ’پرامن مستقبل کا ایک موقع تھا‘‘۔ وزارت خارجہ کی ترجمان ماریہ زخارووا نے فیس بُک پر لکھا کہ ’’ان حملوں کے پس پردہ وہی کارفرما ہیں جو دنیا بھر میں اخلاقی قیادت کی دعویداری کرتے ہیں اور یہ اعلان کردیا کہ وہ قابل استثنیٰ ہیں۔ آپ (مغربی طاقتوں) کو شامی دارالحکومت پر بمباری کے ضمن میں کم سے کم اُس لمحے میں فی الواقعی مستثنیٰ رہنا چاہئے تھا جب اس ملک کے پاس پرامن مستقبل کا ایک موقع موجود تھا‘‘۔ شام میں کیمیائی اسلحہ کی صلاحیتوں کو ختم کرنے کے لئے امریکہ، برطانیہ اور فرانس کی جانب سے اس ملک پر فضائی حملوں کے اعلان کے چند لمحوں بعد سارا دمشق تباہ کن دھماکوں سے دہل گیا تھا۔ واضح رہے کہ دمشق کے نواح میں ایک ہفتہ قبل مشتبہ کیمیائی حملوں میں 40 افراد کی مبینہ ہلاکتوں کے بعد یہ مشترکہ فضائی کارروائی کی گئی ہے۔ ماریہ زخارووا نے کہاکہ ان فضائی حملوں کی کچھ ذمہ داری مغربی میڈیا پر بھی عائد ہوتی ہے اور دعویٰ کیاکہ وائٹ ہاؤز نے دوما میں مشتبہ کیمیائی حملہ کے لئے ’مختلف میڈیا ذرائع‘ کا حوالہ دیا تھا۔ زخارووا نے لکھا کہ ’’جو کچھ ہوا ہے امریکی اور مغربی میڈیا کو بھی اس میں اپنی ذمہ داری کے بارے میں سمجھ لینا چاہئے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT