Monday , July 16 2018
Home / Top Stories / اراضیات ریکارڈ کو محفوظ رکھنے ’ کور بینکنگ نیٹ ورک ‘ کا آغاز

اراضیات ریکارڈ کو محفوظ رکھنے ’ کور بینکنگ نیٹ ورک ‘ کا آغاز

۔11 مارچ کو کسانوں میں پٹہ پاس بکس کی تقسیم ۔ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ کلکٹرس سے خطاب
حیدرآباد 16 جنوری (سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت ریاست میں اراضیات کے ریکارڈس کو محفوظ رکھنے کیلئے بینکنگ نظام کے طرز پر ’کور بینکنگ نیٹ ورک‘ انتظامیہ متعارف کروارہی ہے۔ ریاست کے کسی بھی مقام پر اراضیات کی خرید و فروخت کا نہ صرف اس سسٹم کے ذریعہ پتہ چل جائے گا بلکہ برق رفتار سے کارروائی ہوگی۔ کسی قسم کی تاخیر نہیں ہوگی۔ کور بینکنگ نیٹ ورک سسٹم کو متعارف کرانے سے پاس بُک میں تبدیلیوں کے ذریعہ پتہ چل جائیگا۔ چیف منسٹر کے سی آر نے آج پرگتی بھون میں کلکٹرس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی۔ انھوں نے بتایا کہ تمام تبدیلیاں ویب سائیٹ دھرانی میں اپ ڈیٹ ہوجائیں گی۔ چیف منسٹر تلنگانہ نے کہاکہ 11 مارچ سے پٹہ پاس بکس کسانوں میں تقسیم کئے جائیں گے اور 12 مارچ سے ریوینیو ریکارڈ کی عمل آوری میں انقلابی تبدیلیاں نمودار ہوجائیں گی۔ کے سی آر نے کہاکہ پہلے مرحلہ میں بغیر کسی تنازعہ کے 93 فیصد اراضی سروے کا کام مکمل ہوچکا ہے۔ انھوں نے پنچایت راج کی نئی قانون سازی پر بھی کلکٹرس سے تبادلہ خیال کیا۔ چیف منسٹر نے کہاکہ مستقبل میں منڈل، ڈیویژن سطح کی عدالتوں کے بجائے صرف منڈل سطح کی عدلیہ خدمات انجام دیں گی۔ اراضیات مکانات وغیرہ کا رجسٹریشن کرانے آئندہ محکمہ رجسٹریشن کی ضرورت نہیں رہے گی۔ 443 منڈل دفاتر میں رجسٹریشن کی سہولت فراہم کرنے کا چیف منسٹر نے اعلان کیا۔ رجسٹریشن نظام میں کور بینکنگ سسٹم کو متعارف کرکے پاس بُک کوریئر سے روانہ کرنے کا فیصلہ کیا۔ دھرانی ویب سائیٹ میں اراضیات کے تمام ریکارڈس دستیاب رہیں گے۔ اس ویب سائی کو کہیں سے بھی آپریٹ کیا جاسکتا ہے۔ چیف منسٹر نے کہاکہ ریاست میں مزید 4 ہزار گرام پنچایت تشکیل دینے کا فیصلہ کیا گیا۔ گرام پنچایتوں کے راست یا بالواسطہ انتخابات کروانے کے امکان کا جائزہ لیا جارہا ہے۔ آئندہ ماہ فروری میں بھی گرام پنچایت کے انتخابات کرائے جاسکتے ہیں۔ انھوں نے تمام کلکٹرس کو ہدایت دی کہ وہ ایک ہی دن ساری ریاست میں پٹہ پاس بکس کی تقسیم کو یقینی بنائیں۔ اس کیلئے ہر گاؤں میں ایک نوڈل آفیسر نامزد کرنے کا مشورہ دیا۔ چیف منسٹر نے کہاکہ پاس بُکس کی تقسیم کیلئے حکومت فنڈس کی اجرائی عمل میں آئیگی۔ ایک دن قبل ہی تمام پاس بُکس گاؤں کو روانہ ، ہر گاؤں کیلئے ایک گاڑی کا انتظام کرنے کی کلکٹرس کو ہدایت دی۔ اس پروگرام میں عوامی منتخب نمائندوں کو حصہ دار بنانے کا بھی مشورہ دیا۔

TOPPOPULARRECENT