Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / اراضیات کے ریکارڈ کو باقاعدہ بنانے جامع سروے

اراضیات کے ریکارڈ کو باقاعدہ بنانے جامع سروے

تمام تفصیلات آن لائن دستیاب رہیں گی، کے سی آر کا جائزہ اجلاس
حیدرآباد۔/23اگسٹ، ( سیاست نیوز) چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ڈسمبر کے اواخر تک جامع سروے کراتے ہوئے اراضیات کے ریکارڈز کو باقاعدہ بنانے کی ہدایت دی۔ انہوں نے آج پرگتی بھون میں اعلیٰ عہدیداران کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد کیا جس میں اراضیات کے ریکارڈ کو باقاعدہ بنانے، رجسٹریشن نظام میں تبدیلی لانے کیلئے جامع سروے اور دیگر اُمور کے بارے میں غور و خوض کیا گیا۔ چیف منسٹر نے یکم تا 9 ستمبر دیہی کسان رابطہ کمیٹیاں اور 10تا 15 ستمبر منڈل کسان رابطہ کمیٹیاں تشکیل دیتے ہوئے اجلاس منعقد کرنے کی ہدایت دی۔ اجلاس میں ضلع کلکٹر رنگاریڈی رگھونندن راؤ کی زیر قیادت تشکیل دی گئی کمیٹی کی رپورٹ پر غور و خوض کیا گیا اور ریاست بھر میں اراضیات کے سروے اور کسان رابطہ کمیٹیوں کی تشکیل کی تواریخ کو قطعیت دی گئی۔ اراضیات کے ریکارڈ کو جملہ 3600 وفود کے ساتھ درست کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ ریونیو، زرعی عہدیداروں اور کسان تنظیموں کے تعاون سے اراضی ریکارڈ کو باقاعدہ بنایا جائے گا۔ تمام تفصیلات آن لائن فراہم کی جائیں گی اور آن لائن تفصیلات کو ہی بنیاد بناکر ہر سال حکومت فی ایکر اراضی کیلئے 8 ہزار روپئے سرمایہ کاری کرنے کی اسکیم پر عمل کرے گی۔ حکومت کی جانب سے اراضیات کے سروے کے نتیجہ میں تنازعات اور قانونی کشاکش کے علاوہ اراضی ملکیت کے معاملہ میں واضح صورتحال سامنے آئے گی۔ حکومت نے بتایا کہ 1932-36 کے بعد یہ پہلا جامع سروے ہوگا۔ حضور نظام کے دور میں 1932-36 اراضی سروے کیا گیا تھا اس کے بعد کوئی سروے نہیں کیا جاسکا۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اس سروے کے بعد اراضی تنازعات کا مستقل حل یقینی ہوگا۔ عہدیداروں نے بتایا کہ ریکارڈ کی تنقیح کے بعد اراضی کے مالکین کو نئی پاس بک جاری کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT