Sunday , June 24 2018
Home / Top Stories / اراضی بل کیخلاف نتیش کمار کی ستیہ گرہ

اراضی بل کیخلاف نتیش کمار کی ستیہ گرہ

پٹنہ 14 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی حکومت کے حصول اراضیات بل کے خلاف جنتادل متحدہ کے ریاست گیر احتجاج کے سلسلہ میں چیف منسٹر بہار نتیش کمار نے آج یہاں گاندھیائی طریقہ پر 24 گھنٹے کی بھوک ہڑتال کا آغاز کردیا ہے۔ نتیش کمار آج صبح پارٹی آفس پہنچے اور یوگا اور غسل کے بعد بھوک ہڑتال پر بیٹھ گئے۔ احتجاج میں چیف منسٹر کے ساتھ جنتادل متحدہ

پٹنہ 14 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی حکومت کے حصول اراضیات بل کے خلاف جنتادل متحدہ کے ریاست گیر احتجاج کے سلسلہ میں چیف منسٹر بہار نتیش کمار نے آج یہاں گاندھیائی طریقہ پر 24 گھنٹے کی بھوک ہڑتال کا آغاز کردیا ہے۔ نتیش کمار آج صبح پارٹی آفس پہنچے اور یوگا اور غسل کے بعد بھوک ہڑتال پر بیٹھ گئے۔ احتجاج میں چیف منسٹر کے ساتھ جنتادل متحدہ کے ریاستی صدر بسیشتا نارائن سنگھ، سینئر وزراء وجئے چودھری، شیام رجک، راجیو رنجن سنگھ للن، جے ڈی یو ارکان پارلیمنٹ علی انور، ہربنش، غلام رسول جلیاوی اور سینئر پارٹی قائدین سنجے جھا شریک ہیں۔ مذکورہ بل کے خلاف ریاست بھر میں جنتادل متحدہ کے ارکان پارلیمنٹ و ارکان اسمبلی، تنظیمی عہدیدار بھی بھوک ہڑتال پر بیٹھ گئے ہیں۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے بہار جنتادل (متحدہ) کے صدر نے بتایا کہ گاندھیائی طریقہ پر یہ احتجاج مرکز کے حصول اراضیات بل کے خلاف ہے۔ اس ستیہ گرہ کا مقصد مرکز میں برسر اقتدار حکمرانوں کو عوام کے دلوں کی آواز پہنچانا ہے جوکہ ملک کی تین چوتھائی آبادی کی زرعی اراضیات چھین کر جز معاش سے محروم کردینا چاہتے ہیں۔ ستیہ گرہ کے دوران گاندھی بھجن بھی پیش کیا گیا۔ قبل ازیں نتیش کمار نے نریندر مودی حکومت کی جانب سے پیش کردہ حصول اراضیات بل کو سیاہ قانون قرار دیا اور فی الفور دستبرداری اختیار کرنے کا مطالبہ کیا۔ اُنھوں نے کہاکہ پارلیمنٹ میں اس بل کی منظوری کے باوجود بہار میں روبہ عمل نہیں لایا جائے گا۔ سماجی کارکن انا ہزارے نے بھی نتیش کمار کے احتجاج سے یگانگت کا اظہار کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT