Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / اراضی سروے میں اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے منڈلس کے ریکارڈس کی تیاری

اراضی سروے میں اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے منڈلس کے ریکارڈس کی تیاری

 

حیدرآباد۔/28اکٹوبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ میں جاری اراضی سروے میں اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے وقف بورڈ نے ریاست کے تمام 570 منڈلوں کے ریکارڈ کو علحدہ طور پر تیار کرلیا ہے اور 31 ملازمین کو ریکارڈ کے ساتھ مختلف اضلاع روانہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے آج چیف ایکزیکیٹو آفیسر منان فاروقی کے ہمراہ منڈل واری سطح پر تیار کردہ ریکارڈ کا جائزہ لیا۔ 570 منڈلوں میں 74000 ایکر اوقافی اراضی کی نشاندہی کی گئی ہے اور اس سلسلہ میں متعلقہ ریکارڈ ریونیو حکام کے حوالے کیا جائے گا۔ صدر نشین وقف بورڈ نے بتایا کہ اراضی سروے سے استفادہ کیلئے تقریباً 50 عہدیداروں اور ملازمین پر مشتمل ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔ 31 ملازمین پیر کے دن سے مختلف اضلاع کیلئے روانہ ہوں گے اور انہیں تفویض کردہ اضلاع کے منڈلوں کا دورہ کرتے ہوئے ہر منڈل کا ریکارڈ ریونیو عہدیداروں کے حوالے کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ میں 3 عہدیداروں پر مشتمل نگرانکار کمیٹی تشکیل دی گئی جو ریکارڈ حوالے کرنے کے علاوہ سروے کے کام کی نگرانی کرے گی۔ محمد سلیم نے کہا کہ ریونیو ریکارڈ میں اوقافی اراضی کو بحیثیت وقف درج کرانے کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے ریونیو عہدیداروں کو ہدایت دی ہے کہ وہ وقف بورڈ کے عہدیداروں سے مکمل تعاون کریں اور وقف ریکارڈ کے مطابق سروے کا کام مکمل کریں۔ اس طرح اوقافی اراضیات کا تحفظ ہوپائے گا۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر تمام اضلاع کا دورہ کرتے ہوئے سروے کے کام کا جائزہ لیں گے۔ متعلقہ وقف انسپکٹرس کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ وقف بورڈ سے روانہ کردہ ریکارڈ نہ صرف عہدیداروں کے حوالے کریں بلکہ سروے کے دوران موجود رہیں۔ اسی دوران صدرنشین وقف بورڈ نے اسٹینڈنگ کونسلس کے ساتھ اجلاس منعقد کرتے ہوئے گٹلہ بیگم پیٹ کی اوقافی اراضی کے گزٹ نوٹیفکیشن کی اجرائی کا جائزہ لیا۔ انہوں نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ جلد سے جلد نوٹیفکیشن کی اجرائی عمل میں لائی جائے تاکہ سپریم کورٹ کے احکامات کی تعمیل میں 90 ایکر اراضی کا تحفظ ہوسکے۔ غیر مجاز قابضین اپنی تعمیری سرگرمیاں تیزی سے جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اعلامیہ کی اجرائی کے بعد 143 اعتراضات داخل کئے گئے جو کسی بھی اعتبار سے قابل قبول نہیں ہیں۔ محمد سلیم نے کہا کہ گزٹ نوٹیفکیشن کی اجرائی کے سلسلہ میں اگر وقف بورڈ کا ہنگامی اجلاس طلب کرنا پڑے تو وہ اس کے لئے تیار ہیں یا پھر تمام ارکان کی رائے حاصل کرتے ہوئے نوٹیفکیشن جاری کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے سلسلہ میں وقف بورڈ سے مکمل تعاون کررہی ہے۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر منان فاروقی اور دیگر عہدیداروں نے آج منڈل کی سطح کا ریکارڈ صدرنشین کے روبرو پیش کیا۔ صدرنشین نے کہا کہ ریکارڈ کی پیشکشی میں کوئی تاخیر نہیں ہونی چاہیئے۔ وقف بورڈ کے اسٹینڈنگ کونسلس نے بھی رائے دی ہے کہ بورڈ جلد سے جلد نوٹیفکیشن جاری کرسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT