Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / اراضی سروے میں وقف اراضیات کے تحفظ کو یقینی بنانے کی مساعی

اراضی سروے میں وقف اراضیات کے تحفظ کو یقینی بنانے کی مساعی

منڈل سطح پر اراضیات ریکارڈس ریونیو حکام کو فراہم کرنے کی ہدایت ، محمد سلیم کا جائزہ اجلاس سے خطاب
حیدرآباد ۔ 20۔ اکتوبر (سیاست نیوز) ریاست میں جاری اراضی سروے میں اوقافی اراضی کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے چیف اگزیکیٹیو آفیسر منان فاروقی اور دیگر عہدیداروں کو ہدایت دی کہ منڈل کی سطح پر اوقافی اراضیات کا ریکارڈ ریونیو عہدیداروں تک پہنچایا جائے ۔ انہوں نے آج عہدیداروں کے ساتھ اجلاس میں اراضی سروے سے استفادہ کرنے کیلئے وقف بورڈ کی مساعی کا جائزہ لیا۔ انہوں نے کہا کہ نہ صرف ریکارڈ عہدیداروں تک پہنچایا جائے بلکہ ان کی جانچ تک اس بات کو یقینی بنائیں کہ یہ وقف کی حیثیت سے ریونیو ریکارڈ میں درج کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ کے ریکارڈ کے اعتبار سے جو بھی اراضی موجود ہے، اس میں ایک انچ اراضی پر بھی سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے چیف اگزیکیٹیو آفیسر سے کہا کہ وہ روزانہ کی بنیاد پر رپورٹ طلب کریں تاکہ انسپکٹر آڈیٹرس کی کارکردگی منظر عام پر آئے۔ انہوں نے کہا کہ اراضی سروے کے ذریعہ اوقافی اراضیات کے تحفظ کا بہترین موقع ہے۔ چیف اگزیکیٹیو آفیسر نے بتایا کہ وقف بورڈ نے تمام ضلع کلکٹرس کو ریکارڈ کی تفصیلات روانہ کردی ہے، اس کے علاوہ منڈل کی سطح پر ریکارڈ حوالے کیا جارہا ہے۔ جن اضلاع میں ابھی تک ریکارڈ نہیں پہنچا ، وہاں بہت جلد خصوصی ٹیمیں روانہ کی جائیں گی۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ سروے کی تکمیل تک تمام اوقافی اراضیات کو ریونیو ریکارڈ میں بہرصورت شامل کیا جانا چاہئے ۔ انہوں نے انسپکٹرس کی کارکردگی کے بارے میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی۔ صدرنشین وقف بورڈ نے ٹریبونل ، ہائیکورٹ اور سپریم کورٹ میں زیر دوران مقدمات کے موقف کا جائزہ لینے کیلئے کل 21 اکتوبر کو اسٹانڈنگ کونسلس اور سینئر وکلاء کا اجلاس طلب کیا ہے۔ بورڈ نے مقدمات کے سلسلہ میں جن سینئر وکلاء کی خدمات حاصل کی ہے ، انہیں بھی اجلاس میں مدعو کیا گیا۔ تحت کی عدالتوں اور ہائی کورٹ میں زیر دوران مقدمات کے سلسلہ میں وکلاء کو ہدایات جاری کی جائیں گی ۔ عیدگاہ گٹالہ بیگم پیٹ اور لینکو ہلز کی اراضیات سے متعلق سپریم کورٹ میں زیر دوران مقدمے میں وقف بورڈ کے موقف کا جائزہ لیا جائے گا ۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ مقدمات کی یکسوئی میں تاخیر کے سبب غیر مجاز قابضین کو فائدہ ہورہا ہے ۔ لہذا اسٹانڈنگ کونسلس کو پابند کیا جائے گا کہ وہ مقدمات کی پیروی میں دلچسپی لیں اور بروقت حلفنامہ داخل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اسٹانڈنگ کونسلس کی فیس میں اضافہ کی تجویز ہے اور بورڈ کے اجلاس میں اس کی منظوری حاصل کی جائے گی ۔ محمد سلیم نے شہر کے اہم اوقافی اداروں مکہ مدینہ علاء الدین وقف اور نبی خانہ مولوی اکبر کی ملگیات کے کرایے حاصل کرنے کیلئے خصوصی ٹیم تشکیل دی ہے۔ عہدیداروں پر مشتمل یہ ٹیم دونوں جائیدادوں کے کرایہ داروں سے ملاقات کرتے ہوئے اضافہ شدہ کرایے حاصل کرے گی ۔ بورڈ نے کرایہ داروں کو حال ہی میں نوٹس جاری کی ہے کیونکہ وہ وقف بورڈ کو کرایہ ادا کرنے سے انکار کر رہے ہیں۔ دونوں اداروں کے کرایہ کی وصولی سے بورڈ کی آمدنی میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے اوقافی اداروں پر موجود ہورڈنگس کی آمدنی کے بارے میں تفصیلی رپورٹ طلب کی ہے۔ ایسے تمام ادارے جہاں کمرشیل ہورڈنگس ہیں، ان کا کرایہ مقامی کمیٹی یا متولی حاصل کر رہے ہیں۔ حالانکہ یہ رقم وقف بورڈ کو حاصل ہونی چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT