Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / اراضی سروے کے دوران تحفظ وقف اراضی کے لیے وقف بورڈ کی مساعی

اراضی سروے کے دوران تحفظ وقف اراضی کے لیے وقف بورڈ کی مساعی

انسپکٹرس آڈیٹرس اور بورڈ عہدیداروں کا اجلاس ، چیرمین محمد سلیم کی عہدیداروں کو ہدایت
حیدرآباد ۔ 21 ۔ ستمبر (سیاست نیوز) ریاست میں جاری اراضی سروے میں اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے وقف بورڈ نے مساعی کا آغاز کردیا ہے ۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے آج تمام انسپکٹرس آڈیٹرس اور بورڈ کے اعلیٰ عہدیداروں کا اجلاس طلب کیا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تمام انسپکٹرس آڈیٹرس اپنے متعلقہ اضلاع کے وقف ریکارڈ کے ساتھ جاریہ سروے میں شامل ہوجائیں اور اوقافی اراضیات کو ریونیو ریکارڈ میں شامل کیا جائے ۔ اس سروے کے ذریعہ اوقافی اراضیات کے تحفظ کے کام کی نگرانی بورڈ کے ارکان مولانا اکبر نظام الدین صابری ، ملک معتصم خاں ، ذاکر حسین جاوید اور مرزا انور بیگ کریں گے ۔ ان کے علاوہ بورڈ کے دو سینئر عہدیداروں احمد محی الدین اور ضیاء الدین غوری کو ذمہ داری دی گئی ہے کہ وہ انسپکٹر آڈیٹرس کے ساتھ ربط میں رہیں اور ان کی رہنمائی کریں ۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے بتایا کہ 80 سال کے طویل وقفہ کے بعد تلنگانہ میں اراضی سروے کا اہتمام کیا گیا ہے اور یہ اوقافی اراضیات کے تحفظ کا نادر موقع ہے۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ میں جو ریکارڈ دستیاب ہے ، اسے ضلع کلکٹر کے حوالے کرتے ہوئے انہیں ریونیو ریکارڈ میں شامل کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی دشواری کی صورت میں انسپکٹرس ہیڈ کوارٹر پر موجود عہدیداروں سے ربط قائم کرسکتے ہیں۔ محمد سلیم نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر وہ اضلاع کا دورہ کرتے ہوئے کلکٹر سے نمائندگی کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی اراضیات کا تحفظ ان کی اولین ترجیح ہے ، اس سلسلہ میں وہ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی سے بات چیت کرچکے ہیں۔ ڈپٹی چیف منسٹر سے خواہش کی گئی کہ اوقافی اراضیات کے مسئلہ پر ریونیو حکام کو ہدایات جاری کریں۔ انہوں نے کہا کہ کئی اراضیات ایسی ہیں جن کے بارے میں عدالتوں میں مقدمات زیر دوران ہیں۔ ریونیو حکام کو وقف ریکارڈ پیش کرتے ہوئے ریاست میں تمام اراضیات کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ اجلاس میں عیدگاہ گٹلہ بیگم پیٹ کی اراضی کے تحفظ پر غور کیا گیا۔ ارکان نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلہ کی روشنی میں وقف بورڈ نے اراضی کے سلسلہ میں نوٹفکیشن پہلے ہی جاری کردیا ہے ۔ لہذا غیر مجاز قبضوں کیلئے کوئی گنجائش نہیں ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ وہ بہت جلد ریونیو اور بلدی عہدیداروں کے ہمراہ انہدامی کارروائی انجام دیں گے۔ گزشتہ 10 دنوں کے دوران غیر مجاز تعمیرات میں اچانک اضافہ ہوچکا ہے اور محمد سلیم کی مساعی پر کل تعمیری کاموں کو پولیس نے روک دیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT