Tuesday , December 12 2017
Home / اضلاع کی خبریں / اراضی سروے کے دوران شکایات کی یکسوئی کا تیقن

اراضی سروے کے دوران شکایات کی یکسوئی کا تیقن

سدی پیٹ میں کسانوں میں شعور بیداری پروگرام سے کلکٹر وی رام ریڈی کا خطاب
سدی پیٹ /22 ستمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) کسانوں کے اراضیات کی تفصیلات کو پختہ رکھنے کیلئے ہی ریاست بھر میں اراضی سروے کا پروگرام ریاستی حکومت کی جانب سے رکھا گیا ہے ۔ جس کی تفصیلات ڈسٹرکٹ کلکٹر ضلع سدی پیٹ وینکٹ رام ریڈی نے موضع نانجر پلی موضع میں اراضی سروے پر کسانوں میں شعور بیداری کے دوران کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ ریونیو عہدیدار ہر دن ایک دیہات میں 200 ایکڑ اراضی کے دستاویزات کا معائنہ کر رہے ہیں ۔ اگر کسی کو شکایت ہونے پر سروے کے دوران ہی یکسوئی کی جائے گی ۔ ضلع کلکٹر وینکٹ رام ریڈی نے دیہات میں موجود عوام کو تیقن دیتے ہوئے کہا کہ نئے دستاویزات کی تیاری سے کسی بھی قسم کی پریشانی نہیں ہوگی ۔ اس دوران انہوں نے ریونیو عہدیداروں کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ کسی بھی خامی کے بغیر ریونیو ریکارڈ تیار کیا جائے ۔ اس موقع پر انہوںنے وہاں موجود تحصیلدار پرمیشور سے اراضی سروے کی تفصیلات سے واقفیت بھی حاصل کی ۔ آر ڈی او متیم ریڈی ریونیو عہدیدار اور دیہات کے سرپنچ راجیہ لکشمی موجود تھیں۔ تفصیلات کے بموجب 5 دن کے اراضی سروے کے دوران ضلع سدی پیٹ میں 3997 ایکڑ اراضی میں مسائل دریافت ہوئے ہیں ۔ جس میں 2397 افراد نے عہدیداروں سے شکایت کی ہے ۔ جبکہ 13268 کھاتوں کے جانچ کرنے پر 10871 افراد کے پاس بک کھاتوں میں اراضیات صحیح ثابت ہو رہے ہیں اراضیات کے سروے سے حقداروں کو ان کا حق مل جائے گا کیونکہ کئی اراضیات پر غیر قابضین قبضہ بنائے ہوئے ہیں ۔ کئی ریکارڈ میں غلط ناموں کے اندراج سے فائدہ حاصل کیا جارہا ہے ۔ اس ماہ کی 15 تاریخ سے ریاستی حکومت کی جانب سے اراضیات پر جامع سروے کروایا جارہا ہے ۔ سدی پیٹ ضلع میں جملہ 66 دیہاتوں میں سروے کیا جارہا ہے جملہ 63 ٹیمس اراضیات سروے کیلئے تشکیل دی گئی ہیں ۔ ہر دن ہر دیہات میں 20 سے 30 افراد جس میں کسان بھی شامل ہیں شکایتیں داخل کر رہے ہیں ۔ اراضیات کے سروے سے زمیندار کسان اور دیگر طبقہ کے افراد کو کافی امیدیں ہیں ۔ دیکھنا یہ ہے کہ امید رکھنے والوں کو اراضی سروے سے کتنا انصاف ملے گا ۔

TOPPOPULARRECENT