Tuesday , September 25 2018
Home / جرائم و حادثات / اراضی کی فرضی دستاویزات کی فروخت، تین رکنی ٹولی گرفتار

اراضی کی فرضی دستاویزات کی فروخت، تین رکنی ٹولی گرفتار

حیدرآباد ۔ /11 جولائی (سیاست نیوز) فرضی اراضی کے دستاویزات اور قدیم جوڈیشیل اسٹامپ پیپرس فروخت کرنے میں ملوث تین رکنی ٹولی کو ٹاسک فورس ایسٹ زون ٹیم نے گرفتار کرلیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ 25 سالہ محمد ساجد اکبر عرف امان ساکن روشن کالونی وٹے پلی قدیم جوڈیشیل اسٹامپس پیپر کی مدد سے اراضیات کے فرضی دستاویزات تیار کرتے ہوئے اپنے ایجنٹس کے ذریعہ فروخت کیا کرتا تھا ۔ پولیس نے بتایا کہ امان سلطان شاہی کے ساکن مجیب خان سے اسٹامپ پیپرس حاصل کرتے ہوئے چھتہ بازار کے ظہیر کی مدد سے مختلف محکمہ جات کے مہر تیار کرواکر فرضی دستاویزات تیار کیا کرتا تھا ۔ رئیل اسٹیٹ ایجنٹس امان سے مختلف اراضیات کے فرضی دستاویزات تیار کرواکے اس کا بیجا استعمال کیا کرتے تھے ۔ امان کا ساتھی میر شاکر علی بھی اس کاروبار میں ملوث ہے ۔ پولیس نے مزید بتایا کہ سال 2015-16 اور 2017 ء میں چندرائن گٹہ ، میلاردیوپلی اور بالاپور پولیس نے بھی فرضی دستاویزات کی تیاری میں ملوث پائے جانے پر اسے گرفتار کیا تھا ۔ جیل سے رہائی کے بعد امان دوبارہ سرگرم ہوگیا اور وہ پھر ایک مرتبہ فرضی دستاویزات کا کاروبار شروع کیا تھا ۔ امان اپنے دیگر ساتھیوں میر شاکر علی ، سید عظیم ، مجید خان ، محمد وسیع اور ظہیر کی مدد سے یہ کاروبار چلارہا تھا ۔ ٹاسک فورس نے گرفتار شدہ ملزمین کے قبضے سے جوڈیشیل اسٹامپ پیپرس ، مختلف محکمہ جات کے ربر اسٹامپس ، کمپیوٹر اور دیگر اشیاء برآمد کرلیا اور انہیں پولیس اسٹیشن حسینی علم کے حوالے کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT