Sunday , September 23 2018
Home / کھیل کی خبریں / ارجن ایوارڈ کیلئے 15 ناموں کی تجویز لیکن کوئی کھیل رتن نہیں

ارجن ایوارڈ کیلئے 15 ناموں کی تجویز لیکن کوئی کھیل رتن نہیں

نئی دہلی ۔ 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام) رواں برس کسی بھی کھلاڑی کو راجیو گاندھی کھیل رتن ایوارڈ کیلئے نامزد نہیںکیا گیا ہے جبکہ 15 کھلاڑیوں کو ارجن ایوارڈ کیلئے نامزد کیا گیا ہے جس میں کرکٹر روی چندرن اشون بھی شامل ہیں۔ ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے لیجنڈ کھلاڑی اور سابق کپتان کپل دیو کی صدارت میں 12 رکنی سلیکشن کمیٹی نے فیصلہ کیا ہیکہ رواں برس کھیل

نئی دہلی ۔ 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام) رواں برس کسی بھی کھلاڑی کو راجیو گاندھی کھیل رتن ایوارڈ کیلئے نامزد نہیںکیا گیا ہے جبکہ 15 کھلاڑیوں کو ارجن ایوارڈ کیلئے نامزد کیا گیا ہے جس میں کرکٹر روی چندرن اشون بھی شامل ہیں۔ ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے لیجنڈ کھلاڑی اور سابق کپتان کپل دیو کی صدارت میں 12 رکنی سلیکشن کمیٹی نے فیصلہ کیا ہیکہ رواں برس کھیل رتن کیلئے کسی بھی کھلاڑی کے نام کی تجویز نہیں دی جائے گی حالانکہ 7 ناموں پر غور کیا جارہا تھا۔ یہاں منعقدہ ایک اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا ہے اور اس طرح یہ تیسرا موقع ہیکہ کسی بھی کھلاڑی کو کھیل رتن کیلئے نامزد نہیں کیا گیا ہے۔

دھیان چند کو بھارت رتن دینے کی تجویز
نئی دہلی ۔ 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا میں آج کہا گیا ہیکہ ہاکی کے عظیم کھلاڑی میجر دھیان چند کو بھارت رتن ایوارڈ کیلئے سفارش وزیراعظم کے دفتر روانہ کردی گئی ہے۔ بھارت رتن ہندوستان کا سب سے بڑا ایراڈ ہے جوکہ کسی بھی شخص کے اپنے شعبہ میں غیرمعمولی خدمات اور کارناموں کے عوض دیا جاتا ہے۔ مملکتی وزیرامور داخلہ کرن ریجیجو نے کہا ہیکہ بھارت رتن کیلئے کسی خاص قسم کی سفارش کی ضرورت نہیں ہوتی لیکن آنجہانی میجر دھیان چند کیلئے بھارت رتن کی سفارشات مختلف شعبوں سے ہوچکی ہیں لہٰذا ہم نے ان سفارشات کو وزیراعظم کے دفتر روانہ کردیا ہے۔ کہا جارہا تھا کہ اس مرتبہ سابق وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی، نیتا جی سبھاش چندر بوش اور دھیان چند کو بھارت رتن دیا جائے گا۔

دھونی کی سیکوریٹی میںکمی کردی گئی
رانچی۔ 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مہیندر سنگھ دھونی کی سیکوریٹی میں کمی کردی گئی ہے اور اب انہیں زیڈ زمرہ کے بجائے وائی زمرہ کی سیکوریٹی فراہم کی جائے گی۔ آج یہاں اعلیٰ عہدیداروں کے ساتھ منعقدہ ایک اجلاس میں اہم شخصیتوں کو فراہم کی جانے والی سیکوریٹی کا جائزہ لیا گیا جس کے بعد دھونی کی سیکوریٹی میں کمی کا فیصلہ کیا گیا۔ ڈائرکٹر جنرل پولیس راجیو کمار نے کہا کہ انٹلیجنس اور دیگر ایجنسیوں سے موصولہ مواد کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا ہیکہ دھونی کو کسی قسم کا کوئی خطرہ نہیں لہٰذا ان کی سیکوریٹی میں کمی کردی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT