Friday , November 24 2017
Home / ہندوستان / اردو افسانہ و ناول نگار پیغام آفاقی کا انتقال

اردو افسانہ و ناول نگار پیغام آفاقی کا انتقال

نئی دہلی۔ 20اگست(سیاست ڈاٹ کام) اردو ادب کو مکان اور پلیتہ(فلیتہ) جیسے ناول دینے والے معروف افسانہ نگار اور سابق پولس کمشنر پیغام آفاقی نہیں رہے ۔ آج صبح انہوں نے داعی اجل کو لبیک کہا وہ 61 برس کے تھے ۔ پسماندگان میں اہلیہ ایک بیٹی اور ایک بیٹا ہے ۔پیٖغام آفاقی ان کا قلمی نام تھا جبکہ اصل نام اختر علی فاروقی تھا ۔وہ 1956 میں موضع چانپ، ضلع سیوان، بہار (انڈیا) میں پیدا ہوئے ۔ ابتدائی تعلیم سیوان میں اور اعلی تعلیم علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے حاصل کی جہاں انہوں نے انگریزی ادب میں بی-اے – آنرز اور تاریخ میں ایم اے کیا ۔وہ مشہور زمانہ ادیب قاضی عبدالستار و شہریار اور مورخ عرفان حبیب کے شاگرد بھی رہے ۔ طالب علمی دور کے بعد وہ کل ہند امتحان میں شریک ہوکر پولس سروس میں آگئے اور اس کے بعد وہ بیشتر دہلی میں مقیم رہے ہیں ۔پیغام آفاقی کی تدفین سیوان (بہار) میں عمل میں آئے گی۔
کیرالا میں آوارہ کتوں کے حملہ میں خاتون ہلاک
تھروننتھاپورم 20 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) ایک دلخراش واقعہ میں ریاستی سکریٹریٹ سے صرف 10 کیلو میٹر کے فاصلہ پر جمعہ کی شب ایک 65 سالہ خاتون پر تقریباً 50 آوارہ کتوں نے حملہ کرکے جزوی طور پر کتر کھالیا۔ بعدازاں شدید زخمی خاتون شیلواماں میڈیکل کالج ہاسپٹل میں فوت ہوگئی۔ برہم رشتہ داروں اور مقامی لوگوں نے خاتون کی موت کے لئے شہری حکام کو مورد الزام ٹھہرایا۔ علاقہ پلوویلا کے مکینوں نے بتایا کہ ہمارے صبر و تحمل کا پیمانہ لبریز ہوگیا ہے کیوں کہ سرکاری حکام کتوں کو مارنے کے لئے بعض قوانین کی دہائی دیتے ہوئے معذرت ظاہر کررہے ہیں۔ کیا انسانی جانوں کی قیمت کتوں سے بھی گھٹ گئی ہے۔ یہ واقعہ ساحلی گاؤں پلوویلا میں 9 بجے شب اُس وقت پیش آیا جب ایک خاتون شیلواماں ، رفع حاجت کے لئے ساحل کے قریب گئی تھی۔ کچھ دیر بعد اس کا لڑکا تلاش میں نکلا تو یہ دیکھ کر حیرت زدہ ہوگیا کہ اس کی ماں کو کتے کھینچ کر لے جارہے ہیں جسے بچانے کی کوشش کرنے پر کتوں نے لڑکے پر بھی حملہ کردیا۔

TOPPOPULARRECENT