اردو میں حلف لینے پر بی جے پی ارکان کی مارپیٹ

علیگڑھ۔13ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) علیگڑھ میونسپل کارپوریشن میں آج اس وقت ناخوشگوار منظر دیکھنے کو ملا جب بی ایس پی کے واحد کارپوریٹر مشرف حسین نے اپنے عہدے کا حلف اردو میں لینے پر زور دیا۔ مشرف حسین کی جانب سے اردو میں حلف برداری کے سبب بی جے پی ارکان شدید برہم ہوگئے اور انہوں نے مشرف حسین پر حملہ کردیا ۔ تاہم وہاں موجود دیگر سرکاری عہدیداروں نے بیچ بچائو کرتے ہوئے اس معاملہ کو رفع دفع کرنے کی کوشش کی۔ بعدازاں اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے بی ایس پی کارپوریٹر مشرف حسین نے کہا کہ انہیں قتل کرنے کی ایک منظم انداز میں کوشش کی گئی جبکہ سرکاری عہدیداروں نے اس معاملہ میں کسی قسم کی مداخلت نہیں کی۔ ذرائع کے مطابق اس واقعہ کے بعد علی گڑھ کے نئے منتخبہ میئر محمد فرقان کی کار پر بھی سنگ باری کی گئی تاہم وہ کسی طرح بچ کر فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ محمد فرقان نے کہا کہ میں نہیں سمجھتا کہ غیر ضروری طور پر زبان اور مذہب کو بنیاد بناکر ترقیاتی ایجنڈے کو پٹری سے اتارنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس حرکت سے بی جے پی ارکان بلدیہ کی مایوسی کا اظہار ہوتا ہے۔ میں سمجھ سکتا ہوں کہ بی جے پی ارکان اس بات پر شدید مایوس ہیں کہ 20 سال تک اس نشست پر قبضہ رکھنے کے باوجود اس بار انہیں شرمناک شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ تاہم یہ میں نہیں بلکہ عوام نے انہیں ان کی کارکردگا کا آئینہ دکھایا ہے جو انہیں قبول نہیں ہے۔

مہاراشٹرا میونسپل کونسل انتخابات
87 امیدوار مجرمانہ پس منظر کے حامل
ممبئی ۔ 13 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) مہاراشٹرا میں جاری میونسپل کونسل کے انتخابات میں شامل امیدواروں کی اکثریت مجرمانہ پس منظر رکھتی ہے۔ اس حقیقت کا انکشاف چند دنتظیموں کی جانب سے کیے گئے تحقیق میں ہوا ہے۔ رپورٹ کے مطابق 87 امیدوار پر مجرمانہ کیسس چل رہے ہیں جس میں کئی امیدواروں پر سنگین مقدمات جیسے قتل، عصمت ریزی، اغوا اور ڈکیتی جیسے معاملات درج ہیں۔ یہ جائزہ اسوسی ایشن فار ڈیموکریٹک ریمارکس اور مہاراشٹرا الیکشن واچ کی جانب سے کیے گئے ہیں جس میں اس بات کا بھی پتہ چلا ہے کہ 836 امیدواروں میں سے 108 امیدوار کروڑ پتی ہیں۔

 

 

TOPPOPULARRECENT