Wednesday , December 19 2018

اردو یونیورسٹی ایکشن کمیٹی کڑپہ کی تشکیل

کڑپہ ۔ 27 ۔ نومبر ( ذریعہ ڈاک ) وزیراعلی آندھراپردیش چندرا بابو نائیڈو نے اہل کڑپہ کو یقین دلایا تھا کہ کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کا قیام عمل میں لایا جائے گا ۔ حسب وعدہ انہوں نے اسمبلی میں بھی کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کے قیام کا اعلان کیا ۔ اہل کڑپہ اس تحفہ کیلئے وزیراعلی کے شکر گزار ہیں ۔ کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کے قیام کے سلسلہ میں وزی

کڑپہ ۔ 27 ۔ نومبر ( ذریعہ ڈاک ) وزیراعلی آندھراپردیش چندرا بابو نائیڈو نے اہل کڑپہ کو یقین دلایا تھا کہ کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کا قیام عمل میں لایا جائے گا ۔ حسب وعدہ انہوں نے اسمبلی میں بھی کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کے قیام کا اعلان کیا ۔ اہل کڑپہ اس تحفہ کیلئے وزیراعلی کے شکر گزار ہیں ۔ کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کے قیام کے سلسلہ میں وزیراعلی چندرا بابو نائیڈو کے تعاون کیلئے اردو یونیورسٹی ایکشن کمیٹی کڑپہ کی تشکیل عمل میں لائی گئی ۔ کمیٹی کے سرپرست کی حیثیت سے مولانا مصطفی حسین بخاری ، چیرمین جناب صلاح الدین ، کنوینر جناب محمود شاہد ، کو کنوینر جناب ارشد اقبال ، خازن جناب شکیل احمد شکیل کا انتخاب عمل میں آیا اور ہر شعبہ حیات سے تعلق رکھنے والے افراد کو ممبران کی حیثیت سے شامل کیا گیا ہے ۔ مولانا مصطفی حسین بخاری نے کہا کہ وزیراعلی نے کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کے قیام کا اعلان کر کے اہل کڑپہ کے ساتھ انصاف کیاہے ۔ آندھراپردیش میں کڑپہ کو اردو زبان و ادب کے اعتبار سے مرکزیت حاصل ہے ۔ تعلیمی سطح پر اردو اسکولوں کی کثیر تعداد ہے ۔ شعرا و ادبا کے لحاظ سے کڑپہ کو اولیت حاصل ہے ۔ یہاں ادبی کتابوں کی اشاعت ریاست کے دیگر اضلاع کے مقابلے میں زیادہ ہے ۔ جناب صلاح الدین نے کہا کہ مجھے بحیثیت چیرمین خدمت کا موقع دیا گیا ہے جس کیلئے میں اہل کڑپہ کا ممنون ہوں ۔ اردو یونیورسٹی کڑپہ والوں کا حق تھا اور حق ، حقدار تک پہنچے گا اس کی ہمیں قوی امید ہے ۔ کنوینر محمود شاہد نے کہا کہ اگر ہم اردو یونیورسٹی کے حصول میں کامیاب نہیں ہوئے تو آنے والی نسلیں ہمیں معاف نہیں کریں گی ۔ کڑپہ میں اردو یونیورسٹی کا قیام اردو زبان و ادب کی ترقی و ترویج میں اہم کردار ادا کرے گا اور اردو کو روزگار سے جوڑنے کا ہدف بھی حاصل ہوگا ۔

TOPPOPULARRECENT