Monday , January 22 2018
Home / سیاسیات / اروند کجریوال کے متنازعہ بیان کو شرد یادو کی تائید

اروند کجریوال کے متنازعہ بیان کو شرد یادو کی تائید

نئی دہلی۔/22جنوری، ( سیا ست ڈاٹ کام ) عام آدمی پارٹی سربراہ ارویند کجریوال کو ان کے متنازعہ ریمارک پر غیر متوقع تائید حاصل ہوئی جس میں انہوں نے کہا تھا کہ بی جے پی اور کانگریس سے پیسہ ( رشوت ) لیکر عام آدمی پارٹی کو ووٹ دیں۔ جنتا دل ( متحدہ) کے صدر شرد یادو نے اس تبصرہ کی مدافعت کرتے ہوئے الیکشن کمیشن سے خواہش کی کہ کجریوال کو روانہ نوٹس پ

نئی دہلی۔/22جنوری، ( سیا ست ڈاٹ کام ) عام آدمی پارٹی سربراہ ارویند کجریوال کو ان کے متنازعہ ریمارک پر غیر متوقع تائید حاصل ہوئی جس میں انہوں نے کہا تھا کہ بی جے پی اور کانگریس سے پیسہ ( رشوت ) لیکر عام آدمی پارٹی کو ووٹ دیں۔ جنتا دل ( متحدہ) کے صدر شرد یادو نے اس تبصرہ کی مدافعت کرتے ہوئے الیکشن کمیشن سے خواہش کی کہ کجریوال کو روانہ نوٹس پر نظر ثانی کی جائے۔ا نہوں نے عام آدمی پارٹی سربراہ کے ریمارکس کو حق بجانب قرار دیا اور کہا کہ اس میں کوئی غلط بات نہیں ہے۔ الیکشن کمیشن انتخابات میں زر اور زور بازو کے استعمال کی روک تھام کی کوشش میں ہے۔ جب ایک شخص یہ کہتا ہے کہ بی جے پی اور کانگریس سے رقم لو مگر اپنا قیمتی ووٹ فروخت نہ کرو، ایسا کہنے میں کوئی اعتراض نہیں ہے۔ اتوار کے روز ایک انتخابی ریالی کو مخاطب کرتے ہوئے ارویند کجریوال نے کہا تھا کہ یہ انتخابات کا موسم ہے اور جب بی جے پی اور کانگریس کارکن رقم پیش کریں گے تو انکار کی بجائے قبول کرلیں کیونکہ یہ رقم کسی کو 2G سے تو کسی کو کوئلہ اسکام سے حاصل ہوئی ہے، دونوں جماعتوں سے پیسہ لے لو مگر ووٹ صرف عام آدمی پارٹی کو دیجئے کیونکہ وہ گزشتہ 65سال سے ہمارے ساتھ دغا بازی کررہے ہیں۔

اس بیان پر تمام گوشوں سے شدید ردعمل ظاہر کیا گیا تھا اور الیکشن کمیشن نے بھی کجریوال کو وجہ نمائی نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا کہ یہ انتخابی ضابطہ اخلاق کی سنگین خلاف ورزی ہے کیونکہ رشوت کی ترغیب دینا انتخابی جرم کی تعریف میں آتا ہے۔ شرد یادو نے چیف الیکشن کمشنر ایچ ایس برہما کو ایک مکتوب روانہ کرتے ہوئے کہا کہ میری آپ سے گذارش ہے کہ جمہوریت کے مفاد میں عام آدمی پارٹی سربراہ کو وجہ نمائی نوٹس کی روانگی کے فیصلہ پر نظر ثانی کریں۔ میرے خیال میں انتخابات کے موقع پر مختلف سیاسی جماعتوں کی جانب سے اس طرح کے بیانات عام بات ہے۔ جنتا دل متحدہ صدر نے اس نقطہ نظر سے اتفاق نہیں کیا کہ کیجریوال کے ریمارک سے رشوت خوری کی ترغیب ملتی ہے۔ تاہم انہوں نے یہ تسلیم کیا کہ انتخابات کے دوران غریبوں کو دھمکانے اور لالچ دینے، زر اور زور بازو کا اہم رول ہوتا ہے جبکہ بعض کارپوریٹ اور صنعتی گھرانے اپنی پسندیدہ جماعت کیلئے کالا دھن استعمال کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT