Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / ارون جیٹلی نے تلنگانہ کی عزت نفس کی توہین کی

ارون جیٹلی نے تلنگانہ کی عزت نفس کی توہین کی

چندرا بابو اور کے سی آر سیاسی غلام بن گئے ۔ ڈاکٹر نارائنا کا بیان
حیدرآباد 10 ستمبر ( این ایس ایس ) مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی نے اپنے ریمارکس کے ذریعہ چیف منسٹر تلنگانہ اور ان کی کابینہ کی توہین کی ہے ۔ جیٹلی نے کہا تھا کہ وزیر فینانس تلنگانہ ایٹالہ راجندر نے جو اعداد و شمار پیش کئے ہیں وہ غلط تھے ۔ جیٹلی نے یہ کہتے ہوئے بھی تلنگانہ کی عزت نفس کو متاثر کیا ہے کہ مرکزی حکومت سرکاری پراجیکٹس پر ٹیکس میں کوئی کمی نہیں کریگی کیونکہ ٹیکس میں کمی کی جائے تو ملک پر بوجھ عائد ہوگا ۔ سی پی آئی سکریٹری ڈاکٹر کے نارائنا نے یہ بات کہی ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت تلنگانہ کو چاہئے کہ اس مسئلہ کو چیلنج کے طور پر دیکھے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت کو چاہئے کہ وہ یہ وضاحت کرے کہ ارون جیٹلی نے جو اعداد و شمار پیش کئے ہیں وہ درست تھے یا ریاستی حکومت کے پیش کردہ اعداد و شمار درست ہیں۔ انہوں نے ریاستی حکومت سے مطالبہ کیا کہ اس مسئلہ پر واضح بیان دیا جائے ۔ مخدوم بھون میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے الزام عائد کیا کہ پولیس نے انہیں اور ان کے پارٹی قائدین کو اس وقت گرفتار کرلیا تھا جب وہ جی ایس ٹی سے وررکس کو ہونے والے مسائل کی وضاحت کرنے ارون جیٹلی سے ملاقات کیلئے جا رہے تھے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ تلگو چیف منسٹرس این چندرا بابو نائیڈو اور چندر شیکھر راؤ سیاسی غلام بن گئے ہیں ۔ نارائنا نے کہا کہ ریاستی حکومت نے جی ایس ٹی اجلاس کا حیدرآباد میں کروڑہا روپئے خرچ کرتے ہوئے انعقاد عمل میں لایا تھا ۔ سی پی آئی ریاستی سکریٹری سی ایچ وینکٹ ریڈی ‘ دیگر قائدین ڈی جی نرسنگ راؤ ‘ جی ملیش ‘ ای نرسمہا اور دوسرے موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT