Wednesday , February 21 2018
Home / Top Stories / ارکان اسمبلی کی کارکردگی کا جائزہ لینے بڑے پیمانے پر سروے

ارکان اسمبلی کی کارکردگی کا جائزہ لینے بڑے پیمانے پر سروے

چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ کا اقدام ۔ تین ایجنسیوں ریاست بھر میں کو عوام کی رائے معلوم کرنے کی ذمہ داری

حیدرآباد 21 جنوری ( سیاست نیوز ) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ایسا لگتا ہے کہ ریاست میں انتخابات سے قبل ارکان اسمبلی اور ارکان پارلیمنٹ کی کارکردگی کا جائزہ لینے بڑا سروے کروانے کا کام شروع کیا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ تین ایجنسیوں کو اس سروے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے ۔ چیف منسٹر ریاست میں انتخابات سے قبل کوئی خطرہ مول لینے کو تیار نہیں ہیں اور وہ ہر اسمبلی حلقہ اور ہر پارلیمانی حلقہ میں عوام کی رائے معلوم کرنے یہ سروے کروا رہے ہیں۔ ذرائع کے بموجب چیف منسٹر اس سروے میں حاصل ہونے والی رپورٹس کی بنیاد پر آئندہ انتخابات میں پارٹی امیدواروں کے تعلق سے فیصلہ کرینگے ۔ واضح رہے کہ حالیہ عرصہ میں مختلف سروے رپورٹس منظر عام پر آئی تھیں جن میں ٹی آر ایس کے کئی ارکان اسمبلی کی کارکردگی پر عوام کے عدم اطمینان کا پتہ چلا تھا اور یہ بات سامنے آئی تھی کہ عوام خاص طور پر ان ارکان اسمبلی سے ناراض ہیں جو دوسری جماعتوں سے انحراف کرتے ہوئے برسر اقتدار جماعت میں شامل ہوئے تھے ۔ اس کے علاوہ ایک رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ جہاں پسماندہ طبقات کی آبادی زیادہ ہے ان حلقوں میں بھی ٹی آر ایس ارکان اسمبلی کے تعلق سے صورتحال اطمینان بخش نہیں ہے ۔ ان رپورٹس کو دیکھتے ہوئے چیف منسٹر نے اب ایک بڑا سروے کروانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ہر اسمبلی حلقہ میں تین ایجنسیوں کی جانب سے تفصیلی سروے کرتے ہوئے تقریبا ایک ہزار افراد کی رائے حاصل کی جائیگی ۔ یہ معلوم کرنے کی کوشش کی جائیگی کہ عوام میں برسر اقتدار جماعت کے ارکان اسمبلی کے تعلق سے کیا رائے پائی جاتی ہے ۔ انہیں دوبارہ ٹکٹ دیا جاتا ہے تو پارٹی امیدواروں کی کامیابی کے امکانات کیا ہونگے ۔ امید کی جا رہی ہے کہ جن ایجنسیوں کو چیف منسٹر نے سروے کی ذمہ داری سونپی ہے ان میں ہر ایجنسی تقریبا دیڑھ لاکھ افراد سے مختلف اسمبلی اور پارلیمانی جلقوں میں رائے حاصل کرتے ہوئے اپنی رپورٹس پیش کرینگی ۔ ریاست بھر میں جملہ دس لاکھ افراد کی رائے حاصل کرنے کی کوشش کی جائیگی ۔ ٹی آر ایس ذرائع کا کہنا ہے کہ چیف منسٹر آئندہ انتخابات سے قبل عوام کے موڈ سے مکمل واقفیت حاصل کرنا چاہتے ہیں اور عوام کی رائے کو ہموار کرنے کیلئے بھی اقدامات کرسکتے ہیں۔ حالیہ عرصہ میں ٹی آر ایس کو بلدیاتی اور دیگر انتخابات میں کامیابیوں کے باوجود ارکان اسمبلی کی کارکردگی پر عدم اطمینان کی کیفیت کی وجہ سے یہ سروے کروایا جا رہا ہے ۔ واضح رہے کہ کانگریس پارٹی ریاست میں زبردست سیاسی واپسی کیلئے سخت جدوجہد کر رہی ہے اور تلگودیشم سے ریونت ریڈی کی کانگریس میں شمولیت کے بعد پارٹی کیڈر میں حوصلے بلند ہوگئے ہیں۔ راہول گاندھی کے کانگریس صدر بننے کے بعد پارٹی قائدین بھی جوش و خروش سے کام کرنے لگے ہیں اور اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے چیف منسٹر انتخابات سے قبل حالات سے مکمل آگاہی حاصل کرکے فیصلے کرنا چاہتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT